"حسین احمد مدنی" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
حسین احمد مدنیؒ
م (حسین احمد مدنیؒ)
م (حسین احمد مدنیؒ)
(ٹیگ: القاب)
 
=== خاندان===
سید حسین احمد مدنی کے 4 بھائی تھے۔محمدتھے۔سیدمحمد صدیق،صدیق،سید احمد،احمد،سید جمیل احمد،محمود،احمد،سیدمحمود، بھائیوں میں آپ درمیانے تھے۔
 
آپکی تین بہنیں تھیں۔
=== عصری بنیادی نصابی کتب ===
آمد نامہ، دستور الصبیاں، گلستان کا کچھ حصہ مکان پر اور اسکول میں دوئم درجہ تک پڑھنا ہوا۔ حساب، جبرو مقابلہ تک مساحت اور اقلیدس مقالہ اولیٰ، تمام جغراقفیہ عمومی و خصوصی، تاریخ عمومی و خصوصی، مساحت علمی (تختہ جریب وغیرہ سے امین ناپ کر باقاعدہ نقشہ بنانا) اور ہر چیز آٹح سال کی عمر تک بخوبی یاد ہوگئی تھی۔تیرہ سال کی عمر میں والد صاحب نے 1309ھ میں [[دار العلوم دیوبند|دارالعلوم دیوبند]] بھیج دیا۔ دو بھائی پہلے سے وہیں مقیم تھے چنانچہ انہی کے زیر سایہ بھائیوں کمرہ میں رہنے لگے۔ یہ کمرہ مولانا محمود الحسن کے مکان کے بالکل قریب واقع تھا۔
:اساتذہ؛محمود الحسن، ذولفقار علی، عبدالعالی، خلیل احمد سہارنپوری، حکیم محمد حسن، غلام رسول بفوی، حافظ محمد احمد، حبیب الرحمٰن، محمد صدیق
=== دیوبند میں تعلیم کا آغاز ===
یہان پہنچنے کے بعد [[گلستان سعدی|گلستان]] اور میزان شروع کی۔ بڑے بھائی صاحب نے محمود الحسن سے ابتدا کی درخواست کی چنانچہ مجمع میں انہوں نے مولانا خلیل احمد سے فرمایا آپ شروع کرادیں انہوں نے ابتداء کروادی۔ پھر بھائی سے میزان، منشعب پڑھی۔
 
دیوبند پہنچنے کے بعد وہ ضعیف سی کھیل کود کی آزادی جوکہ مکان پر تھی۔ وہ بھی جاتی رہی۔دونوں بھائی صاحبان بالخصوص بڑے بھائی صاحب سب سے ذیادہ سخت تھے۔ خوب مارا کرتے تھے۔ اس تقید اور نگرانی نے مجھ میں علمی شغف ذیادہ سے ذیادہ اور لہو لعب کا شغف کم سے کم کردیا۔<ref>(تخلیص نقش حیات، صفحہ 54 تا 55)</ref>
==اساتذہ سے حصول علم==
<table style="width: 100%" align="center" border="2" cellspacing="2">
<tr>
<th class="style1">کتب کا حاصل کردہ علم</th>
<th class="style1">کیفیت استاذ</th>
<th class="style1">نام استاذ</th>
<th class="style1">نمبر شمار</th>
</tr>
<tr>
<td class="style1">دستور المبتدی، زرادی، زنجہانی، مراح الارواح، قال
اقوال، مروات، تہذیب قطبی تصدیقات، قطبی تصورات، میر قطبی، مفید الطالبین،
نفحۃ الیمن، مطول، ہدایہ اخیرن، ترمذی شریف، بجاری شریف، ابوداؤد، تفسیر
بیضاوی، نخبۃ الفکر، شرح عقائد نسفی، حاشیہ خیالی، موطا امام مالک، مؤطا
امام محمد</td>
<td class="style1">دارلعلوم دیوبند کے پہلے شاگرد اور مولانا قاسم نانوتوی
سے علم حدیث حاصل کیا، حاجی امداداللہ مہاجر مکی سے خلافت حاصل کی اور
دارالعلوم دیوبند کے صدر مدرس</td>
<td class="style1">مولانا محمود الحسن</td>
<td class="style1">1</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">فصول اکبری</td>
<td class="style1">مولانا محمود الحسن کے والد اور دارالعلوم دیوبند کے
بانیوں میں سے تھے</td>
<td class="style1">مولانا ذولفقار علی</td>
<td class="style1">2</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">مسلم شریف، نسائی شریف، ابن ماجہ، سبعہ معلقہ، صدرا،
شمس بازغہ،توضیع تلویح</td>
<td class="style1">مولانا قاسم نانوتوی کے شاگردوں میں سے تھے، دارلعلوم
دیوبند سے فراغت حاصل کرکے دورالعلوم میں مدرس مقرر ہوئے</td>
<td class="style1">مولانا عبدالعالی</td>
<td class="style1">3</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">تخلیص المفتاح</td>
<td class="style1">دارالعلوم دیوبند کے اولین فضلا میں سے تھے۔ ابو داؤد
شریف کی شرح بذل المجہود پانچ جلدوں میں لکھی</td>
<td class="style1">مولانا خلیل احمد سہارنپوری</td>
<td class="style1">4</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">پنج گنج، صرف میر، نحو میر، مختصر المعانی، سلم العلوم،
ملا حسن، جلالین شریف، ہدایہ اوّلین</td>
<td class="style1">مولانا محمود الحسن کے چھوٹے بائی تھے۔ آُکے دور مین
دارالعلوم دیوبند نے بہت ترقی کی۔43 سال تک دیوبند میں تدریس کی</td>
<td class="style1">مولانا حکیم محمد حسن</td>
<td class="style1">5</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">شرح جامی، کافیہ، ہدایۃ النحو، منیۃ المصلّیٰ، کنز
الدقائق، سرح وقایہ، شرح مائۃ عامل، اصول الشاشی</td>
<td class="style1">دارالعلوم دیوبند میں معین المدرس تھے، 40 سال تک
دیوبند کے مفتی رہے، آپکے فتاویٰ کی تعداد1،018،000ایک لاکھ اٹھارہ ہزار ہے</td>
<td class="style1">مفتی عزیز الّحمٰن</td>
<td class="style1">6</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">نور الانوار، حسامی، قاضی مبارک، شمائل ترمذی</td>
<td class="style1">علوم عقلیہ و نقلیہ کے حافظ،1208ھ میں دارالعلوم دیوبند
میں مدرس مقرر ہوئے،</td>
<td class="style1">،مولانا غلام رسول بفوی</td>
<td class="style1">7</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">ملا جامی بحث اسم</td>
<td class="style1">مولانا قاسم نانوتوی کے فرزند، دارلعلوم دیوبند کے مدرس
اور آپ کی تاریخ میں دیوبند کی ترقیوں کا زریں دور آپکا زمانہ سمجھا جاتا
ہے</td>
<td class="style1">مولانا حافظ محمد احمد</td>
<td class="style1">8</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">مقامات حرہری، دیوان متنبنی</td>
<td class="style1">دارالعلوم دیوبند کے نائب مہتمم</td>
<td class="style1">مولانا حبیب الرّحمٰن</td>
<td class="style1">9</td>
</tr>
<tr>
<td class="style1">گلساتن، میزان منشعب</td>
<td class="style1">سید حسین احمد مدنی کے برے بھائی۔ 1331ھ میں مدینہ
منورہ میں فوت ہوئے اور جنت البقیع میں دفن ہوئے</td>
<td class="style1">مولانا سید محمد صدیق</td>
<td class="style1">10</td>
</tr>
</table>
 
 
== مالٹا میں قید ==
207

ترامیم