"حیدرآباد، سندھ" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
تاریخ - نیرون کوٹ
م (clean up, replaced: ← using AWB)
م (تاریخ - نیرون کوٹ)
 
== تاریخ ==
===نیرون کوٹ===
موجودہ حیدرآباد شہر کی جگہ پہلے '''نیرون کوٹ''' نامی ایک بستی قائم تھی؛ یہ سندھوُ دریا (اب [[دریائے سندھ]]) کے کنارے مچھیروں کی ایک چھوٹی بستی تھی۔ اِس کا نام اِس کے سردار نیرون کے نام سے اخذ کیا جاتا تھا۔ دریائے سندھ کے متوازن میں ایک پہاڑی سلسلہ واقع ہے جسے [[گنجو ٹاکر]] کہتے ہیں۔ یہ بستی جوں جوں ترقی کرتی گئی ویسے ہی دریائے سندھ اور اِن پہاڑوں کے درمیان بڑھنے لگی۔تھوڑے ہی عرصے میں اِس پہاڑی سلسلے پر کُچھ بدھمت پجاری آ بسے۔ شہر میں اچھی تجارت کے خواہشمند لوگ اِن پجاریوں کے پاس اپنی التجائیں لے کر آتے تھے۔ یہ بستی ایک تجارتی مرکز تو بن ہی گئی لیکن اِس کے ساتھ ساتھ دوسری اقوام کی نظریں اِس کی اِس بڑھتی مقبولیت کو دیکھے نہ رہ سکیں۔ نیرون کوٹ کے لوگوں کے پاس ہتھیار تو تھے نہیں، بس فصلیں کاشت کرنے کے کُچھ اوزار تھے۔ چنانچہ، جب 711ء میں مسلمان عربی افواج نے اِس بستی پر دھاوا بولا تو یہ لوگ اپنا دفاع نہ کر سکے اور یہ بستی تقریباً فنا ہو گئی۔
 
[[چچ نامہ]] میں ایک سردار کا اکثر ذکر ملتا ہے جس کا نام [[آغم لوہانہ]] تھا۔ یہ [[منصورہ (برہمن آباد)‎|برہمن آباد]] نامی شہر کا سردار تھا اور اِس کی ملکیت میں دو علاقے آتے تھے — لوہانہ اور ساما۔ 636ء کی اِس تحریر میں، لوہانہ کے جنوب میں ایک بستی کا ذکر ملتا ہے جسے '''نارائن کوٹ''' کہا گیا ہے۔ تاریخ نویسوں کا ماننا ہے کہ نارائن کوٹ اور نیرون کوٹ ایک ہی بستی کا نام تھا۔
 
==شہر کے لوگ==
1,262

ترامیم