"لفظ" کے نسخوں کے درمیان فرق

843 بائٹ کا اضافہ ،  5 سال پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
=== لفظ ===
 
'''لفظ''' ، [[عربی زبان|عربی]] زبان کا [[کلمہ]] ہے اور اسکے معنی بنیادی طور پر خارج کرنے، نکالنے، پھینکنے وغیرہ کے آتے ہیں اور اسی سے اسکا وہ [[لسانیات|لسانیاتی]] مفہوم نکالا جاتا ہے جس میں یہ بکثرت [[لسان|زبان]]{{زیر}} [[اردو]] میں مستعمل ہورہا ہے یعنی [[منہ]] سے خارج ، نکالی یا ادا کی گئی کوئی بات اور / یا اسکا [[تحریری]] خاکہ؛ اسکا قریبی [[انگریزی زبان|انگریزی]] متبادل word ہوسکتا ہے اور لفظ کی جمع الفاظ کی جاتی ہے۔ جب کوئی لفظ یعنی منہ سے خارج کی گئی کوئی [[آواز]] بامعنی ہو یا یوں کہہ لیں کہ جب اس آواز سے [[دماغ]] میں کوئی تصور یا مفہوم پیدا ہوتا ہو تو پھر ایسی صورت میں اس لفظ کو عربی و اردو قواعد کی رو سے [[کلمہ (لسانیات)|کلمہ (speech)]] کہا جاتا ہے، یہاں کلمہ کے سامنے speech کا متبادل صرف وضاحت کی خاطر درج کیا گیا ہے کہ یہی لفظ دیگر معنی بھی رکھتا ہے جیسے [[گفتگو|گفتار یا کلام]] وغیرہ؛ اور گفتگو کرنا یا مخاطب ہونے کے لیے جو کلام کی اصطلاح آتی ہے وہ بھی لفظ کلمہ کی طرح عربی کے کلم سے ماخوذ ہے۔
 
<big>لفظ</big>
 
چند حروف کو آپس میں ملانے سے لفظ بنتا ہے۔
 
<big>یا</big>
 
چند حروف کو آپس میں ملا کر بولنے یا لکھنے سے [[لفظ]] بنتا ہے۔
 
<big>مثالیں</big>
 
۱۔ [[پاکستان]] لفظ بنتا ہے پ۔ ا، ک، س، ت، ا۔ ن کے حروف کو آپس میں ملانے سے۔
 
۲۔ [[مسلمان]] لفظ بنتاہے م، س، ل، م،ا، ن کے حروف، کو آپس میں ملانے سے۔
 
۳۔ منتظر لفظ بنتا ہے م، ن، ت، ظ، ر کے حروف کو آپس میں ملانے سے۔
 
۴۔ [[ایران]] لفظ بنتا ہے ا، ی، ر، ا، ن کے حروف کو آپس میں ملانے سے۔
 
۵۔ [[شیر]] لفظ بنتا ہے ش، ی، ر کے حروف کو آپس میں ملانے سے۔
 
 
[[زمرہ:لفظی اکائیات]]
720

ترامیم