"احسان" کے نسخوں کے درمیان فرق

592 بائٹ کا اضافہ ،  6 سال پہلے
اسی سے باب افعال کا مصدر ’’احسان‘‘ ہے۔ گویا احسان ایسا عمل ہے، جس میں حسن و جمال کی ایسی شان موجود ہو کہ ظاہر و باطن میں حسن ہی حسن ہو اور اس میں کسی قسم کی کراہت اور ناپسندیدگی کا امکان تک نہ ہو۔ پس عمل کی اسی نہایت عمدہ اور خوبصورت ترین حالت کا نام ’’احسان‘‘ ہے اور اس کا دوسرا قرآنی نام ’’تزکیہ‘‘ ہے اور اس کے حصول کا طریقہ اور علم تصوف و سلوک کہلاتا ہے۔
==احسان کے لغوی معنی==
احسان کے لغوی معنی ہیں:
*نیکی، اچھا سلوک، مہربانی کا برتاو، اچھے سلوک کا بار، یا وہ جسے سلوک کرنے والا یا جس سے سلوک کیا گیا، محسوس کرے۔
*نیکی۔ عمل خیر وغیرہ۔
*اچھے سلوک کا اعتراف۔ ممنونیت اور اعتراف ممنونیت۔
*تصوف میں نورِ بصیرت سے حق کا مشاہدہ۔ صفات کے پردے میں ذات خداوندی کا دیدار۔ مشاہدہ صفاتیہ جس کو عین الیقین کہتے ہیں۔
 
== قرآن{{زیر}} مجید میں احسان کا مفہوم ==