"شاہراہ ریشم" کے نسخوں کے درمیان فرق

حجم میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی ،  4 سال پہلے
م
درستی املا بمطابق فہرست املا پڑتالگر
م (درستی املا بمطابق فہرست املا پڑتالگر)
[[ملف:Silkroutes.jpg|thumb|400px|شاہراہ ریشم کی مختلف تجارتی گذرگزر گاہیں]]
عہد{{زیر}} قدیم (Ancient Ages) کے ان تجارتی راستوں کو مجموعی طور پر '''شاہراہ ریشم''' ([[انگریزی زبان|انگریزی]]:Silk Road یا Silk route) کہا جاتا ہے جو [[چین]] کو [[اناطولیہ|ایشیائے کوچک]] اور [[بحیرہ روم]] کے ممالک سے ملاتے ہیں۔ یہ گذرگزر گاہیں کل 8 ہزار کلو میٹر (5 ہزار میل) پر پھیلی ہوئی تھیں۔ شاہراہ ریشم کی تجارت [[چین]]، [[مصر]]، [[بین النہرین]]، [[فارس]]، [[برصغیر|بر صغیر]] اور [[روم]] کی تہذیبوں کی ترقی کا اہم ترین عنصر تھی اور جدید دنیا کی تعمیر میں اس کا بنیادی کردار رہا ہے۔
 
شاہراہ ریشم کی اصطلاح پہلی بار جرمن جغرافیہ دان [[فرڈیننڈ وون رچٹوفن]] نے [[1877ء]] میں استعمال کی تھی۔ اب یہ اصطلاح [[پاکستان]] اور [[چین]] کے درمیان زمینی گذرگزر گاہ [[شاہراہ قراقرم]] کے لیے بھی استعمال ہوتی ہے۔
 
مغرب سے [[شمالی چین]] کے تجارتی مراکز تک پھیلی یہ تجارتی گذرگزر گاہیں [[سطح مرتفع تبت]] کے دونوں جانب شمالی اور جنوبی حصوں میں تقسیم ہیں۔ شمالی راستہ بلغار قپپچاق علاقے سے گذرتا ہے اور چین کے شمال مغربی صوبے [[گانسو]] سے گذرنے کے بعد مزید تین حصوں میں تقسیم ہو جاتا ہے جن میں سے دو [[صحرائے ٹکلا مکان]] کے شمال اور جنوب سے گذرتے ہیں اور دوبارہ [[کاشغر]] پر آ کر ملتے ہیں جبکہ تیسرا راستہ [[کوہ تین شان|تین شان]] کے پہاڑوں کے شمال سے [[طرفان]] اور [[الماتی]] سے گذرتا ہے۔
 
یہ تمام راستے [[وادئ فرغانہ|وادی فرغانہ]] میں [[خوقند]] کے مقام پر ملتے ہیں اور مغرب میں [[صحرائے کراکم]] سے [[مرو]] کی جانب جاری رہتے ہیں اور جہاں جلد ہی جنوبی راستہ اس میں شامل ہو جاتا ہے۔