Manzoor khan 1

صارف از 30 جون 2016ء
139 بائٹ کا اضافہ ،  5 سال پہلے
اضافہ و املا کی درستی کی گئی
(تصحی اور املا درست کی)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
(اضافہ و املا کی درستی کی گئی)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
'''دین اور نظریہ'''
دین کو نظریات سے علیحدہالگ کرنآاہل نظر کی ذمہ داری ہے !
الہامی کتابوں کی صورت میں رہنمائی کی موجوگی میں انسانی نظریات کو دین کے ساتھ گڈ مڈ کرنے کی کیا ضرورت ہے ؟
اس کے کیا نتائج سامنے آ رہےآہے ہیں ؟
انسان کواللہ نے بطور نائب دنیا میں بھیجا، سارے معاملات میں خود مختیاری دینے کے ساتھ راہنمائ کآ بھی اہتمام کیا .
جنکے معاشرتی ،معاشی و،معاشی، سماجی و اخلاقی کردارکوپسندکیا انہیں لوگوں کو پیغام پہنچانے کے لئےاپنی نشانیونکے ساتھ منتخب و مقرر کیا ۔ اور بنی نوع انسان کو ان کے نقش قدم پر چلنے کی تاکید کی۔
اور بتایا کہ جو ان کی تقلیدکرے گا کامیاب ہو گا .جونہیں کرے گا وہ الجھتاالجھا رہے گا ۔۔
ان ہی پیغمبروں نے غلط کام سے باز رہنے کو ،فلاح کاراستہ بتایا۔ جس پر عمل پیرا ہو کر اس زمین کو جنت بنایا جانا تھا .
اپنی کمائی کی راہیں بنانے کیلیے مزھبی پیشواہ سامنے آ تے ر ہے ۔
اورزمین کو ماں کا رتبہ مل جائے یہ اسی وقت ممکن ہے جب .یہاں آباد تمام لوگ راہ راست پر چلیں انسان ہے نہیں بلکہ ساری مخلوقات کا فطری حق تسلیم کر لیا جائے
اس فطری حق کا تعین کرنا وکی دوستوں کا اعزاز ہے .
آج اسلآم کے نام پر جو ہو رہا ہے یہ سب وہی ہے جس کو روکنے کے لیے دین میں زور دیا گیا ہے۔ رنگ برنگی پوشاک اور چبوترے اسلامی تعلیمات اور انسانی عقل کے خلاف ہیں. کلام اللہ کے مطابق فلاح کے لیے عمل صالح کی کو ترجیح دی گئ ہے جبکہ سارے نظریات وضح و قطح کا پرچار کرتے ہیں جس میں رنگ و روپ کو اجاگر کیا جاتا ہے. بہانے بہانے سے بے راہ روی کی طرف راغب کیا .یوں دین خلیل کے بارے میں غلط فہمیاں پھیلآئں .
119

ترامیم