"ابو الفضل فیضی" کے نسخوں کے درمیان فرق

کوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
بتایا جاتا ہے کہ ابو الفضل کو اکبر کے بیٹے شہزادہ سلیم نے سازش کے ذریعہ قتل کروادیا۔ دکن کی لڑائی سے واپسی کے دوران ویر سنگھ بندیلا نامی ایک راجہ کے ذریعہ یہ کام کروایا گیا۔ ابو الفضل ‘مان سنگھ اور دوسرے نو رتنوں کی طرح جہانگیر کی تاجپوشی کے خلاف تھے۔مدھیہ پردیش کے ترواڑ کے قریب ان کی تدفین کردی گئی اور ان کا سر شہزادہ کو بطور تحفہ بھیجا گیا تھا۔ یہ واقعہ1613کا ہے جبکہ سلیم نے1602میں ہی مغلیہ سلطنت کی باگ ڈور سنبھال لی تھی۔<ref>http://viqarehind.com/اکبر-کے-نو-9-رتن قسط10/</ref>
== حوالہ جات ==
{{حوالہ جات}}
[[زمرہ:1547ء کی پیدائشیں]]
[[زمرہ:1595ء کی وفیات]]