"تعدد شوہری" کے نسخوں کے درمیان فرق

82 بائٹ کا اضافہ ،  2 سال پہلے
(کثیر زوجگی سے محصلہ مواد شامل کیا)
"اس بات پر فقہاء امت کا اجماع ہے کہ اس آیت ٍ(سورہ نساء آیت 3)کی رو سے تعدد ازواج کو محدود کیا گیا ہے اور بیک وقت چار سے زیادہ بیویاں رکھنے کو ممنوع کردیا گیا ہے۔ روایات سے بھی اس کی تصدیق ہوتی ہے۔ چنانچہ احادیث میں آیا ہے کہ طائف کا رئیس غیلا جب اسلام لایا تو اس کی نو بیویاں تھیں۔ نبی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے اسے حکم دیا کہ چار بیویاں رکھ لے اور باقی کو چھوڑ دے۔ اسی طرح ایک دوسرے شخص (نَوفَل بن معاویہ) کی پانچ بیویاں تھیں۔ آپ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا کہ ان میں سے ایک کو چھوڑ دے"۔<ref>تفسیر تفہیم القرآن سید ابوالاعلی مودودی سورہ نساء آیت 3</ref>
 
== حوالہ جات ==
{{حوالہ جات}}
 
[[زمرہ:تعلقات کاری]]
[[زمرہ:اصطلاحات]]
[[زمرہ:بیاہ]]
33,085

ترامیم