"خدا بیٹا" کے نسخوں کے درمیان فرق

درستی, اضافہ سانچہ/سانچہ جات
(درستی, اضافہ سانچہ/سانچہ جات)
{{مسیحیت}}
[[File:Monreale god resting after creation.jpg|thumb|200px|ابن اللہ تخلیق کے بعد آرام کرتے ہوئے۔]]
'''خدا بیٹا''' یا '''ابن اللہ'''<ref>دینِ فطرت مسیحیت یا اسلام، از علامہ برکت اللہ مرحوم</ref> سے مراد مسیحی کے نزدیک خدا کی صفت کلام (Word of God) ہے۔ انسانوں کی صفت کلام اور خدا کی صفت کلام کے درمیان میں فرق بیان کرتے ہوئے [[مقدس]] [[توما ایکویناس]] رقمطراز ہے کہ: ”انسانی فطرت میں صفت کلام کوئی جوہری وجود نہیں رکھتی، اسی وجہ سے اس کو انسان کا بیٹا یا مولود نہیں کہہ سکتے، لیکن خدا کی صفت کلام ایک جوہر ہے جو خدا کی بابت میں اپنا ایک وجود رکھتا ہے۔ اسی لیے اس کو حقیقتاً نہ مجازاً بیٹا کہا جاتا ہے اور اس کی اصل کا نام [[خدا باپ|باپ]] ہے۔“<ref>Aquinas the Summa Theologica Q.33 ART 206,3</ref>
 
صفت کلام [[خدا باپ|باپ]] کی طرح قدیم ہے۔ خدا کی یہی صفت [[یسوع]] کی انسانی شکل میں حلول کر گئی ہے۔ جس کی وجہ سے یسوع ابن مریم کو خدا کا بیٹا کہا جاتا ہے۔ یہ [[تثلیت]] کا دوسرا اہم جز ہے۔
== مزید دیکھیے ==
* [[مسیح کے ناموں کی فہرست]]
 
== حوالہ جات ==
{{حوالہ_جات}}
 
{{مسیحیت اساس|}}
 
[[زمرہ:مسیحی اصطلاحات]]
[[زمرہ:مسیحیت میں خدا کا تصور]]