"شاعر جمالی" کے نسخوں کے درمیان فرق

حجم میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی ،  4 سال پہلے
م
درستی املا
م (روبالہ: درستی رجوع مکرر ناوبکس)
م (درستی املا)
==ادبی خدمات==
شاعر جمالی کی زندگی کا زیادہ حصہ جون پور میں ہی گزرا ۔شاعر جمالی نے آل انڈیا مشاعروں کے علاوہ بیرونی ممالک کے مشاعروں جیسے دوہا قظر،، دبئی ،ابو ظہبی،وغیرہ میں بھی شرکت کی اور کافی شہرت حاصل کی۔’’شاعراور ادیب [[شارق ربانی]] کا کہنا ہے کہ شاعر جمالی بہترین غزلیں کہتے تھے اور [[اردو ادب]] کی باکمال شخصیت تھے۔‘‘
شاعر جمالی کو ان کے شعری مجموعہ ’’لہجہ‘‘ پر اردو اکادمی ایوارڈ مل چکا ہے اور ادبی خدمات کے لئےلیے انہیں ’’پوروانچل رتن اعزاز ‘‘ نظیر بنارسی ایوارڈ اور آل انڈیا کامل ایووارڈ سے بھی نوازا گیا۔
==تصنیف==
شاعر جمالی کے تین شعری مجموعے ہیں۔ پہلا ۔ کرب، دوسرا۔ صحیفہ اور تیسرا۔ لہجہ ہے۔
شاعر جمالی کے [[راحت اندوری]] ،[[بشیر بدر]] ،انور جلال پوری ،[[اظہار وارثی]] ،[[اثر بہرائچی]] ،معراج فیض آبادی ،احمد نثار ،اسلم آلہ آبادی،عالم غازی پوری، [[شارق ربانی]] وغیرہ سے قریبی تعلقات تھے۔
==وفات==
شاعر جمالی کا انتقال 8[[اکتوبر]]، [[2008ء]] کو ایک آل انڈیا مشاعرہ میں شرکت کے لئےلیے جاتے وقت [[فیض آباد]] [[ریلوے اسٹیشن]] پر ہوا تھا اور تدفین [[نانپارہ]] میں ہوئی تھی، جس میں کشیر تعداد میں مقامی اور بیرونی ادبی شخصیات نے بھی شر کت کی تھی۔
==نمونہ کلام==
{{نمونہ کلام آغاز}}
{{نمونہ کلام شعر|اپنے اندر جھانکنے کی ان کو فرصت ہی کہاں |جن کی چشم معتبر دنیا کے نیک و بد پہ ہے}}
{{نمونہ کلام شعر|جنگ کس نے جیت لی اور ہوگئی کس کو شکست |انحصار اس فیصلے کا جنگ کے مقصد پہ ہے}}
{{نمونہ کلام شعر|اب مجھے سچائی کی عظمت کا اندازااندازہ ہوا !! |اب مری گردن یزیدی خنجروں کی زد پہ ہے}}
{{نمونہ کلام شعر|دیکھئے تو ساری دنیا ہی مہذب ہو چکی |سوچئے تو یہ ابھی تہذیب کی ابجد پہ ہے}}
{{نمونہ کلام شعر|تاجروں نے اس کا سون لے لیا مٹی کے مول |بحث فنکاروں میں اب تک اسکے خال و خد پہ ہے}}
111,622

ترامیم