"اسلامی سکہ" کے نسخوں کے درمیان فرق

12 بائٹ کا ازالہ ،  3 سال پہلے
م
خودکار درستی+صفائی (9.7)
(گروہ زمرہ بندی: حذف از زمرہ:تاریخ اسلام)
م (خودکار درستی+صفائی (9.7))
[[اسلام]] کی آمدسے پہلے [[عرب]] میں ایرانی اوررومی سکّے چلتے تھے حضرت عمرؓ کے عہد مبارک میں ۱۸ھ؁18ھ؁ میں اسلامی سکّہ ڈھالاگیا۔آپؓ ایرانی [[درہم]] وزن کرائے تو اس میں سے بعض ۲۰قیراط20قیراط کے بعد ۱۲12 قیراط کے اوربعض ۱۰قیراط10قیراط کے نکلے حضرت عمر نے ان تینوں کا مجموعہ لیکراس کا ثلث یعنی ۱۴قیراط14قیراط درہم کا وزن قراردیا اس طرح درہم کا وزن سات مثقال ہوگیا یہ درہم کسروی درہم کے نمونے پرڈھالے گئے بعض کا نقش الحمدللہ بعض کالااللہ الا اللہ اوربعض کا محمدرسول اللہ قراردیاگیا۔ حضرت عثمان غنیؓ کے زمانۂ خلافت میں صرف دراہم ڈھالے گئے [[دینار]] نبومیہ کے عہد میں [[عبدالملک بن مروان]] کے زمانے میں ڈھالے گئے۔
 
 
==اموی عہد==
 
695ء ، 76ھ میں [[دمشق]] میں ٹکسال تعمیر کی گئی۔ [[حجاج بن یوسف]] نے [[کوفہ]] میں بھی ایسی ہی ایک ٹکسال قائم کی۔ [[سونا|سونے]] اور [[چاندی]] کے [[دینار]] میں بالعموم ایک اور دس کی نسبت تھی۔ اگرچہ اس نسبت میں بعض اوقات تبدیلیاں بھی ہوتی رہیں۔ اسلامی سکے کی معیار قدرو قیمت اور خوبصورتی کی بدولت بہت جلد اقوام عالم نے ان کو قبول کر لیا۔
 
 
[[زمرہ:سکے]]