"نووا سکوشیا" کے نسخوں کے درمیان فرق

12 بائٹ کا اضافہ ،  3 سال پہلے
م
خودکار درستی+ترتیب+صفائی (9.7)
م (خودکار: خودکار درستی املا ← سے، سے)
م (خودکار درستی+ترتیب+صفائی (9.7))
[[تصویرفائل:Nova Scotia, Canada.svg|thumbتصغیر|نووا سکوشیا]]
'''نووا سکوشیا''' <small>(Nova Scotia)</small>، [[کینیڈا]] کا ایک [[صوبہ]] ہے جو کینیڈا کے جنوب مشرقی ساحل پر واقع ہے۔ اٹلانٹک کینیڈا کا یہ سب سے زیادہ آبادی رکھنے والا صوبہ ہے۔ اس کا دار الخلافہ ہیلی فیکس ہے جو علاقے کا اہم معاشی مرکز ہے۔ نووا سکوشیا کینیڈا کا دوسرے نمبر پر سب سے چھوٹا صوبہ ہے۔ اس کا کل رقبہ 55287 مربع کلومیٹر ہے۔ اس کی کل آبادی 935962 افراد ہے۔ یہ کینیڈا کا چوتھا کم آبادی والااور دوسرا گنجان ترین آباد صوبہ بھی ہے۔
نووا سکوشیا کی معیشت کا انحصار قدرتی ذرائع پر ہے تاہم بیسویں صدی کے دوران اس میں تبدیلی بھی آئی ہے۔ ماہی گیری، کان کنی، جنگلات اور زراعت آج بھی اہم ہیں تاہم سیاحت، ٹیکنالوجی، فلم، موسیقی اور فنانس جیسے شعبے بھی اہمیت اختیار کر گئے ہیں۔
== موسم ==
 
نووا سکوشیا معتدل آب و ہوا والی جگہ پر موجود ہے۔ چونکہ صوبہ تقریباًًتقریباً ہر طرف سے پانی سے گھرا ہوا ہے،اس کا موسم میری ٹائم بجائے کانٹی نینٹل ہے۔ کانٹی نینٹل آب و ہوا میں درجہ حرارت کی شدت کو سمندر معتدل بناتا رہتا ہے۔
 
نووا سکوشیا کے موسم پر سمندر کا گہرا اثر ہے اور صوبے میں گاڑیوں کی نمبر پلیٹ پر بھی سمندر کی شکل بنی ہوئی ہے۔ یہاں موسم سرما نسبتاً سرد اور گرمیاں گرم تر ہوتی ہیں۔ صوبے کے اطراف یعنی شمال میں سینٹ لارنس کی خلیج، مغرب میں خلیج فنڈی اور جنوب اور مشرق میں بحر اوقیانوس ہیں۔
 
نووا سکوشیا پر سمندر کے اثر کی وجہ سے یہ صوبہ کینیڈا کا گرم ترین صوبہ ہے۔ نووا سکوشیا میں زیادہ شدید درجہ حرارت نہ ہونے، تاخیر سے اور لمبی گرمیاں، اکثر ابر آلود موسم، سمندری دھند اور روز بروز بدلتا موسم کا موسم بہت بدلتا رہتا ہے۔ نووا سکوشیا کے موسم کی درج ذیل چار وجوہات ہو سکتی ہیں
 
* مغربی ہواؤں کا اثر
* تین مختلف ہوائی نظاموں کا ملاپ جو مشرقی ساحل پر ہوتا ہے
* سمندر کا اثر
 
چونکہ نووا سکوشیا بحر اوقیانوس کے بالکل ساتھ ہی ہے اس لیے یہاں استوائی طوفان اور ہری کین گرمیوں اور خزاں میں آتے رہتے ہیں۔ 1871 سے اب تک یہاں تقریباًًتقریباً ہر چار سال میں ایک طوفان ضرور آیا ہے۔ آخری بار یہاں درجہ دو کا طوفان ہری کین جوان ستمبر 2003 میں آیا تھا۔ آخری استوائی طوفان نوئل 2007 میں آیا تھا۔
 
== تاریخ ==
 
تقریباًًتقریباً 11 ہزار سال قبل پیلو انڈین لوگوں نے موجودہ دور کی نووا سکوشیا کے علاقے میں سکونت اختیار کی۔ آرچیاک انڈین لوگ یہاں ایک ہزار سے 5 ہزار سال قبل تک آبا د رہے۔ میکماق جو یہاں اس صوبے اور پورے ملک کے آبائی قبائل ہیں، ان لوگوں کے براہ راست وارث ہیں۔
 
کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ وائی کنگ بحری قزاق یہاں کچھ عرصہ آباد رہے تاہم اس بارے کم ہی ثبوت ملتے ہیں۔ اس بارے تاریخ دان بھی متفق نہیں۔ شمالی امریکا میں وائی کنگ لوگوں کی مصدقہ آبادی صرف لانس آوکس کے سبزہ زاروں میں تھی جو اس بات کا ثبوت ہے کہ وائی کنگ لوگ اس جگہ کو کرسٹوفر کولمبس سے بھی 500 سال قبل دریافت کر چکے تھے۔
نووا سکوشیا میں قدرتی ذرائع بکثرت موجود ہیں۔ سکوشین شیلف میں مچھلیوں کی بے انتہا تعداد ہے۔17ویں صدی میں فرانسیسیوں کی طرف سے ترویج دیے جانے کے بعد سے ماہی گیری یہاں صوبے کی معیشت کا اہم ستون تھی۔ 20ویں صدی کے اختتام پر حد سے زیادہ مچھلیاں پکڑے جانے کی بنا پر اس میں کمی واقع ہوئی ہے۔ 1992 میں کاڈ مچھلی کی تعداد میں انتہائی کمی اور شکار پر پابندی کی وجہ سے یہاں 20000 ملازمتیں ختم ہوئی ہیں۔
 
2005 میں فی کس آمدنی 31344 ڈالر سالانہ تھی جو کینیڈا کی اوسط فی کس آمدنی سے تقریباًًتقریباً تین ہزار ڈالر کم اور کینیڈا کے امیر ترین صوبے یعنی البرٹا سے نصف تھی۔
 
کان کنی یہاں کی اہم صنعت ہے اور یہاں جپسم، نمک اور بیریٹ نکلتا ہے۔ 1991 سے اب تک گہرے سمندر میں تیل اور گیس بھی معیشت کا اہم حصہ بن چکے ہیں۔ زراعت ابھی بھی صوبے کی معیشت کا اہم حصہ ہے۔ نووا سکوشیا کے وسط میں لمبر اور کاغذ کی صنعتیں بھی ملازمتوں کے لیے اہم ہیں۔
صوبائی آمدنی کا بڑا حصہ افرادی اور تجارتی سطح پر لگائے گئے ٹیکس ہیں۔ تمباکو اور شراب پر بھی ٹیکس لگائے گئے ہیں۔ اٹلانٹک لاٹری کارپوریشن میں بھی صوبے کے حصص ہیں اور تیل اور گیس کی رائلٹی سے بھی معقول آمدنی ہوتی ہے۔ 2006 اور 2007 کے [[مالی سال]] کے لیے صوبے کا بجٹ چھ اعشاریہ نو ارب ڈالر تھا جس میں اندازہً سات کروڑ بیس لاکھ کی رقم اخراجات سے زیادہ تھی۔ وفاق سے ملنے والی آمدنی ایک ارب اڑتیس کروڑ پچاسی لاکھ ڈالر ہے جو صوبائی آمدنی کا بیس فیصد ہے۔ اگرچہ کئی سالوں سے نووا سکوشیا کا بجٹ مناسب ہوتا تھا لیکن اس کی وجہ سے کل بجٹ کا خسارہ یا قرضہ جات اب بارہ ارب ڈالر سے تجاوز کر گئے ہیں۔ نتیجتاً کل آمدنی کا بارہ فیصد حصہ ان قرضوں کی ادائیگی میں چلا جاتا ہے۔ صوبے کو وفاقی جی ایس ٹی میں سے ایچ ایس ٹی کا حصہ ملتا ہے۔
 
نووا سکوشیا میں تین بار ایسی حکومتیں بنی ہیں جو دیگر پارٹیوں کی حمایت سے اکثریت حاصل کرسکی تھیں۔ اس کی وجہ نووا سکوشیا میں انتخابی حلقوں کی کچھ اس طرح سے تقسیم ہے کہ کسی ایک جماعت کے لیے اکثریت حاصل کرنا کافی مشکل ہے۔ نووا سکوشیا مین لینڈ کے دیہات پروگریسو کنزرویٹو جبکہ ہیلی فیکس کی میونسپلٹی کی تمام تر حمایت نیو ڈیمو کریٹس کے پاس ہے۔ کیپ بریٹن زیادہ تر لبرل کو ووٹ دیتاہے تاہم چند یاک پروگریسو کنزرویٹو اور نیو ڈیمو کریٹ بھی چنے جا سکتے ہیں۔ اس طرح تین مختلف جماعتوں کو تقریباًًتقریباً یکساں ووٹ ملتے ہیں۔
 
پچھلے انتخابات 13 جون 2006 کو ہوئے تھے جن میں پروگریسو کنزرویٹو کو 23، نیو ڈیمو کریٹ کو 20 اور لبرل کو 9 نشستیں ملیں۔
{{کینیڈا کے صوبہ اور علاقہ}}
 
[[زمرہ:نووا سکوشیا|نووا سکوشیا]]
[[زمرہ:1867ء میں قائم ہونے والے ممالک اور علاقے]]
[[زمرہ:اٹلانٹک کینیڈا]]
[[زمرہ:میریبرطانوی ٹائمزشمالی امریکا]]
[[زمرہ:برطانیہ کی سابقہ مستعمرات]]
[[زمرہ:کینیڈا کے صوبے و علاقہ جات]]
[[زمرہ:کینیڈا]]
[[زمرہ:کینیڈا کی صوبائی تقسیم]]
[[زمرہ:نوواکینیڈا سکوشیا|کے صوبے و علاقہ جات]]
[[زمرہ:میری ٹائمز]]
[[زمرہ:1867ء میں قائم ہونے والے ممالک اور علاقے]]
[[زمرہ:برطانوی شمالی امریکا]]