"مانی" کے نسخوں کے درمیان فرق

63 بائٹ کا اضافہ ،  3 سال پہلے
م
م (درستی املا بمطابق فہرست املا پڑتالگر + ویکائی)
}}
{{عظیم فلاسفہ}}
'''مانی'''(216ء-276ء) [[تیسری صدی]] کاایک [[ایرانی]] جس نے [[مانویت]] کی بنیاد رکھی۔ آج یہ مذہب باقی نہیں لیکن ایک زمانے میں اس کے پیروکاروں کی تعداد بہت زیادہ تھی۔ یہ مذہب قدیم مذاہب کا دلچسپ امتزاج تھا۔ مانی کے مطابق [[زرتشت]]، [[گوتم بدھ]]اور [[یسوع مسیح]] ([[عیسیٰ]]) پیغمبر تھے لیکن اس کی صورت میں یہ ایک ہی مذہب میں اب مکمل ہو گیا ہے۔ یہ مذہب قریب ایک ہزار سال تک قائم رہا۔
 
== حالاتِ زندگی ==
 
== گرفتاری و سزا ==
کچھ عرصہ بعد جب شاپور کی موت کے بعد اس کا [[ولی عہد]] ہرمز تخت پر بیٹھا تو اس نے مانی کو ایران بلوا لیا۔ اب مانی نے دوبارہ شد و مد سے ایران کے طول و عرض میں اپنے مذہب کی تبلیغ شروع کردی۔ یہ بات زرتشتیوں کی برداشت سے باہر ہو گئی۔ انہوں نے ہرمز کے بھائی یعنی شہزادہ بہرام کو اس لادین کے مقابلے میں اپنے زرتشتی مذہب کی مدد پر اکسایا نیز اپنی خفیہ و ظاہر مدد کا یقین دلایا۔ ابھی ہرمز کی حکومت کو ایک ہی سال گزرا تھا کہ بہرام نے بغاوت کی اور ہرمز کو قتل کرکے خود بادشاہ بن بیٹھا۔ اس نے حکم جاری کیا کہ میری سلطنت کی حدود میں مانی جہاں کہیں ہو اسے گرفتار کر کے لایا جائے۔
 
مانی گرفتار ہو کر دار الحکومت آگیا۔ اور اس کی زجر توبیخ شروع ہو گئی۔ اسے قید خانے کی بجائے کھلے میدان میں ستون سے باندھ کر رکھا گیا تاکہ سب لوگ اس کے انجام سے عبرت پکڑیں۔ اسی دوران ملک میں مانی مذہب کے پیروکاروں کا بھی قتلِ عام شروع ہو گیا۔ 60 سال کا بوڑھا مانی 23 دن عقوبتیں جھیل کر 2 مارچ 276ء کو فوت ہو گیا۔ اس کے مرنے بعد بادشاہ نے حکم دیا کہ اس کی کھال اتار کر اس میں بھس بھر کے شہر کے دروازے پر لٹکا دی جائے۔ (وہ دروازہ بعد میں کئی زمانوں تک مانی دروازہ کے نام سے مشہور رہا۔)
 
مانی کی موت کے بعد بھی اس کا مذہب شمال میں روس تک اور مغرب میں تمام [[شمالی افریقہ]] سے مراکش تک اور وہاں سے [[ہسپانیہ]] کے راستے یورپ کے کئی ممالک تک پھیلتا چلا گیا۔ تقریباً ایک ہزار سال تک اس مذہب کے ماننے والے موجود رہے۔ اب یہ مذہب ناپید ہوچکا ہے۔
== تصانیف ==
مانی نے کچھ کتابیں بھی تصنیف کیں، جن کی نسبت اس کا دعویٰ تھا کہ یہ وحی الہیٰ ہے۔ ان میں سے ایک کتاب شاپورگان [[پہلوی زبان]] میں تھی۔ باقی [[سریانی زبان]] میں تھیں۔
 
”ہمیشہ حکمت و عمل کی باتیں خدا کے رسول کے ذریعے انسان تک پہنچائی جاتی رہی ہیں۔ ایک وقت میں انہیں خدا کے رسول بدھ نے ہندوستان میں پہنچایا، دوسرے زمانے میں [[زرتشت]] نے فارس میں، دوسرے زمانے میں یسوع نے مغرب میں اور اس کے بعد یہ وحی اور اس آخر زمانے کی پیشگوئی، خداوند کے حقیقی رسول مجھ مانی کے ذریعے بابل میں پہنچائی۔“<ref>شاپورگان باب #1</ref>
 
=== مذہبی ارکان ===
* [[بت پرستی]] کی ممانعت
* سات نمازیں فرض ہیں۔
(1 نماز صبح، 4 نمازیں دن میں 2 نمازیں رات میں)
[[زمرہ:بانیان مذاہب]]
[[زمرہ:تیسری صدی کی ایرانی شخصیات]]
[[زمرہ:خودکار ویکائی]]