"اسلام اور مسیحیت" کے نسخوں کے درمیان فرق

 
== توحید ==
مسیحیت [[تثلیث|تثلیث فی التوحید]] (باپ، بیٹا اور روح القدس) کا قائل ہے۔ یعنی خدائی تین اقنوم سے مرکب ہے۔ ایکیہ تینوں مل کر ایک بھی ہیں۔ ہر اقنوم الگ الگ خدائی صفات کا مالک ہے۔ یہ وہ بنیادی عقیدہ ہے جس پر موجودہ مسیحیت کی عمارت قائم ہے۔
 
 
{{اقتباس|{{تصویری قرآن|112|1|2|3|4}}{{سخ}}
کہہ دو وہ اللہ ایک ہے۔ اللہ بے نیاز ہے۔ نہ اس کی کوئی اولاد ہے اور نہ وہ کسی کی اولاد ہے۔ اور اس کے برابر کا کوئی نہیں ہے۔}}
 
 
== عقیدہ بشر ==
{{اصل|موروثی گناہ}}
اہلِ مسیحیت کے مطابق بنی نوع انسان گناہ گار ہے۔ آدم نے گناہ کیا، اب یہ گناہ وراثتاً نسل انسانی چلا آ رہا ہے۔ لہٰذا جمیع بنی نو انسان گناہ میں ملوث ہیں جس سے وہ نکل نہیں سکتے۔
 
اسلام کا انسان کے متعلق بالکل برعکس خیال ہے۔ اللہ نے انسان کو اپنا خلیفہ بنا کر بھیجا ہے۔ (البقرہ 2: 30) اہل اسلام کا عقیدہ ہے کہ انسان خود ہی گناہ کرنے کا ذمہ دار ہوتا ہے۔
 
== مزید دیکھیے ==