"صفوی سلطنت" کے نسخوں کے درمیان فرق

80 بائٹ کا اضافہ ،  3 سال پہلے
م
خودکار: اضافہ زمرہ جات +ترتیب+صفائی (14.9 core): + زمرہ:1501ء میں قائم ہونے والے ممالک اور علاقے
م (خودکار درستی+ترتیب+صفائی (9.7))
م (خودکار: اضافہ زمرہ جات +ترتیب+صفائی (14.9 core): + زمرہ:1501ء میں قائم ہونے والے ممالک اور علاقے)
اسماعیل صفوی سے ایران کے ایک نئے دور کا آغاز ہوتا ہے جسے ایران کا شیعی دور کہا جاسکتا ہے۔ اس سے قبل ایران میں اکثریت سنی حکمران خاندانوں کی رہی تھی اور سرکاری مذہب بھی اہل سنت کا تھا لیکن شاہ اسماعیل نے [[تبریز]] پر قبضہ کرنے کے بعد شیعیت کو ایران کا سرکاری مذہب قرار دیا اور اصحاب رسول پر [[تبرا]] کرنا شروع کر دیا۔ اس وقت تبریز کی دو تہائی آبادی سنی تھی اور شیعہ اقلیت میں تھے۔ خود شیعی علما نے اس اقدام کی مخالفت کی لیکن کچھ نوجوانی کا گرم خون اور کچھ عقیدے کی محبت، شاہ اسماعیل نے ان مشوروں کو رد کرکے تلوار ہی کو سب سے بڑی مصلحت قرار دیا۔
 
شاہ اسماعیل صفوی نے صرف یہی نہیں کیا کہ شیعیت کو ایران کا سرکاری مذہب قرار دیا بلکہ اس نے شیعیت کو پھیلانے میں تشدد اور بدترین تعصب کا بھی ثبوت دیا۔ لوگوں کو شیعیت قبول کرنے پرمجبور کیا گیا، بکثرت علما قتل کر دیے گئے جس کی وجہ سے ہزار ہا لوگوں نے ایران چھوڑدیا۔
شاہ اسماعیل کی فوج "[[قزلباش]]" کہلاتی تھی۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اسماعیل کے باپ حیدر نے اپنے پیروؤں کے لیے سرخ رنگ کی ایک مخصوص ٹوپی مقرر کی تھی جس میں 12 اماموں کی نسبت سے 12 کنگورے تھے۔ ٹوپی کا رنگ چونکہ سرخ تھا اس لیے ترکی میں ان کو قزلباش یعنی سرخ ٹوپی والے کہا گیا۔
 
صفوی سلطنت ایران کی آخری طاقتور اور پرشکوہ حکومت تھی۔ [[ساسانی سلطنت|ساسانیوں]]، [[سلجوقی سلطنت|سلجوقیوں]] اور [[تیموری سلطنت|تیموریوں]] کی طرح صفویوں نے بھی دنیا بھر میں ایران کا بڑا نام کیا۔
 
صفوی حکومت سوا دو سو سال قائم رہی۔ اس زمانے میں علمی ترقی جس میں ایران ہمیشہ سے ممتاز رہا، بالکل ختم ہو گئی۔ اس لیے صفوی دور میں ایسے بڑے بڑے عالم اور مصنف پیدا نہیں ہوئے جیسے پچھلے دور میں ہوئے تھے۔ کچھ شاعر اور مؤرخ البتہ پیدا ہوئے لیکن وہ بھی ایران چھوڑ کر دہلی اور آگرہ چلے گئے کیونکہ وہاں ان کی سرپرستی صفویوں سے زیادہ کی جاتی تھی۔
صفوی دور صرف فن تعمیر اور مصوری کی وجہ سے مشہور ہے۔ رضا عباسی اور میرا اس زمانے کے مشہور مصور ہیں۔ ایران کا سب سے بڑا مصور بہزاد آخری زمانے میں تبریز آ گیا تھا جو اس وقت شاہ اسماعیل کا دارالسلطنت تھا۔
 
{{سلطنتیں}}
{{تاریخ اسلام}}
 
{{موضوعات عراق}}
 
[[زمرہ:صفوی سلطنت]]
[[زمرہ:1501ء میں قائم ہونے والے ممالک اور علاقے]]
[[زمرہ:ایران اور فارس میں بادشاہت]]
[[زمرہ:ایران کی مملکتیں اور سلطنتیں]]