"ملبار ضلع" کے نسخوں کے درمیان فرق

30 بائٹ کا اضافہ ،  4 سال پہلے
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
'''ملبار''' [[برطانوی راج|برطانوی ہند]] کے [[مدراس پریزیڈنسی]] اور آزاد ہند کی ریاست مدراس کا ایک انتظامی ضلع تھا۔<ref>{{cite EB1911 |wstitle=Malabar |volume=17 |page=452}}</ref> اس ضلع میں موجودہ دور کے اضلاع [[ضلع کنور|کنور]]، [[کوژیکوڈ ضلع|کوژیکوڈ]]، [[ویاناڈ]]، [[ملاپورم ضلع|ملاپورم]]، [[پالاکاڈ ضلع|پالاکاڈ]] اور [[ترشور ضلع|ترشور]] کی [[چاوکاڈ تحصیل]] شامل تھے۔ اس ضلع کے مغرب میں بحیرۂ عرب، شمال میں جنوبی کنڑا ضلع، مشرق میں مغربی گھاٹ اور جنوب میں نوابی ریاست کوچی تھے۔ اس ضلع کا 15,009 مربع کیلومیٹر تھا۔ ضلعِ ملبار کا صدر مقام کالیکٹ تھا۔
==تاریخ==
ضلعِ ملبار کے اکثر علاقے [[1792ء]] کی [[تیسری اینگلو میسور جنگ]] کے خاتمے پر [[ٹیپو سلطان]] نے [[برٹش ایسٹ انڈیا کمپنی]] کو سپرد کیے تھے۔ ویاناڈ کو [[1799ء]] کی [[چوتھی اینگلو میسور جنگ]] کے خاتمے پر حوالہ کیا۔ اس ضلع کا انتظامی صدر مقام کالیکٹ تھا۔‌ آزادئ ہند کے بعد مدراس پریزیڈنسی کو ازسرنو منظم کر کے [[مدراس ریاست]] تشکیل دی۔ 1 نومبر [[1956ء]] کو لسانی بنیادوں پر تقسیم ہونے لگی تو شمال میں کاسرگوڈ تحصیل کو اور جنوب میں تراونکور کوچی کو شامل کر کے ریاست کیرلا کی تشکیل ہوئی۔ [[1 جنوری]] [[1957ء]] میں ملبار ضلع کو تقسیم کر کے تین اضلاع [[کوژیکوڈ ضلع|کوژیکوڈ]]، [[پالاکاڈ ضلع|پالاکاڈ]] اور [[کنور ضلع|کنور]] کی تشکیل ہوئی۔ [[1969ء]] میں کوژیکوڈ اور پالاکاڈ کے حصوں کو ملا کر [[ملاپورم ضلع،ضلع]]، [[1980ء]] میں کوژیکوڈ کے حصوں سے ویاناڈ ضلع تشکیل دئے۔
 
یوروپیوں کی آمد تک لفظ ملبار عام طور پر استعمال میں نہ تھا۔ لفظ ملبار [[ملیالم زبان]] کا لفظ ملابارم سے مشتق ہے۔ ملا کا معنی پہاڑ اور وارم یعنی بار کا معنی ڈھال ہے۔ شمالی اور شمال مرکزی کیرلا میں عام بول چال میں ملیالم اور تامل[[تمل]] کے 'و' کا تلفظ عموماً 'ب' سے بدل دیا جاتا ہے۔ چنانچہ لفظ ملبار شمالی ملیالم کا لفظ ملابارم (ملاوارم) سے مشتق ہے۔
<ref>Agrarian Relations in Late Medieval Malabar
By M. T. Narayanan, ISBN No. : 81-7211-135-5, page=16,17</ref>