"ٹراٹسکی" کے نسخوں کے درمیان فرق

6,754 بائٹ کا اضافہ ،  2 سال پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
 
=== روس کا انقلاب اور وطن واپسی ===
انقلاب روس کے آغاز کے بعد ٹراٹسکی نیویارک سے 27 مارچ کو اپنے کنبے اور بعض دوسرے روسیوں کے ساتھ ’’کر سچن فورڈ‘‘ نامی ناروے کے جہاز پر روس واپسی کے لئے روانہ ہوا۔ ہائی فکس ، کینیڈاسے ہوتے ہوئے فن لینڈ کے راستے یہ روس میں پہنچا<ref name=":52">Chapter 23 of [http://www.marxists.org/archive/trotsky/works/1930-lif/ch42.htm ''My Life'']</ref>۔ 1917ء میں ایک بار پھر پیٹروگراڈ سوویت کے چیئرمین بنے اور اقتدار پر محنت کشوں کے قبضے میں بنیادی کردار ادا کیا۔<ref name=":2">{{Cite news|title=لیون ٹراٹسکی، جو وقت کو مات دے گیا!|url=http://www.struggle.pk/75-years-since-the-assasination-of-leon-trotsky/|work=The Struggle {{!}} طبقاتی جدوجہد|access-date=2018-09-16|language=en}}</ref>ٹراٹسکی نے مزدور ریاست کے اندر اپنی قائدانہ صلاحیتوں کو استعمال کرتے ہوئے مختلف اور اہم ترین ریاستی امور سرانجام دیئے<ref>{{Cite news|title=لیون ٹراٹسکی کا 76 واں یومِ شہادت: محبت فاتحِ عالم|url=https://www.marxist.pk/on-76th-death-anniversary-of-leon-trotsky/|work=Lal Salaam {{!}} لال سلام|access-date=2018-09-16|language=en-US}}</ref>، 1917ء سے 1925ء تک نومولود مزدور ریاست کے امور خارجہ، دفاع، ریلوے، معاشی منصوبہ بندی وغیرہ کے عوامی کمیسار (وزیر) رہے۔ انقلاب کے فوراً بعد امریکہ سمیت 21 سامراجی ممالک نے سوویت جمہوریہ کو کچلنے کے لئے چڑھائی کی تو ٹراٹسکی کو سرخ فوج کی تشکیل اور تعمیر کا فریضہ سونپا گیا۔ ایک سال سے کم کے عرصے میں انہوں نے زار کی تین لاکھ کی خستہ حال فوج کو تیس لاکھ کی طاقتور اور فعال سرخ فوج میں تبدیل دیا اور سامراجی یلغار کو شکست فاش دی<ref name=":2" />۔ 10 نومبر 1918ء کو سٹالن نے پارٹی کے سرکاری اخبار پراودا میں لکھا<ref name=":3">{{Cite news|title=لیون ٹراٹسکی: موت جسے مٹا نہ سکی!|url=http://www.struggle.pk/death-anniversary-of-lein-trotsky/|work=The Struggle {{!}} طبقاتی جدوجہد|access-date=2018-09-16|language=en}}</ref>؛<blockquote>’’انقلابی سرکشی کے تمام تر تنظیمی امور کامریڈ ٹراٹسکی کی ہدایات کے تحت انجام پائے۔ یہ کہا جاسکتا ہے کہ جس برق رفتاری سے سپاہی سوویت کے ساتھ ملے اور جس مستعدی سے انقلابی ملٹری کمیٹی نے کام کو منظم کیا وہ سب کامریڈ ٹراٹسکی کا مرہون منت ہے جس کے لئے پارٹی ان کی احسان مند ہے۔‘‘</blockquote>
<blockquote></blockquote><blockquote></blockquote>
 
=== افسر شاہی اور جلا وطنی ===
روس انقلاب کے بعد جرمنی سمیت یورپ کے کئے ممالک میں محنت کشوں نے انقلابی سرکشیاں کیں جنہیں بے دردی سے ریاستی جبر کے ذریعے کچل دیا گیا۔ نتیجتاً انقلاب سماجی، معاشی اور تکنیکی طور پر روس جیسے پسماندہ ملک مقید ہو کر رہ گیا۔ 1924-25ء کے چینی انقلاب کی شکست کے بعد روسی انقلاب کی زوال پزیری کا عمل اور بھی تیز ہوگیا۔ قلت اور ثقافتی پسماندگی کے باعث عوام اور سماج سے بالاتر ہو کر مراعات حاصل کرنے والی بیوروکریسی کے راستے میں سب سے بڑی رکاوٹ ٹراٹسکی کی ’’لیفٹ اپوزیشن‘‘ تھی جس سے وابستہ کامریڈز بالشویک انقلاب کے حقیقی کردار اور مقاصد کو بچانے کی جنگ لڑ رہے تھے<ref name=":3" />۔ افسر شاہی ایک طرف اپنی مراعات اور اختیارات میں اضافہ کرتی چلی گئی تو دوسری طرف بالشویزم کے نظریات پر ڈٹے رہنے والے ٹراٹسکی جیسے قائدین اور سیاسی کارکنان کو راستے سے ہٹانے کا عمل شروع کر دیا گیا۔ افسر شاہی کے خلاف اٹھنے والی ہر آواز کو دبا دیا گیا، ٹراٹسکی کی ’لیفٹ اپوزیشن‘ کے ہزاروں کارکنان کو تشدد اور ٹھنڈ سے قتل کرنے کے لئے سائبیریا کے جبری مشقت کے کیمپوں میں بھیج دیا گیا۔1927ء میں ٹراٹسکی کو ریاستی عہدے سے معزول کر کے کیمونسٹ پارٹی سے نکال دیا گیااور 1929ء میں روس سے جلا وطن کر دیا گیا۔ شہرت کے بلندیوں سے گر کر وہ ایک ایسا انسان بن گیا جس کے لئے یہ دنیا ’’ویزے کے بغیر سیارہ‘‘ تھی۔ تاہم اس عہد میں بھی وہ اپنے نظریات پر ڈٹا رہا اور سٹالنزم کے خلاف مردانہ وار جدوجہد جاری رکھی<ref name=":2" />۔
 
=== وفات ===
روزنامہ ایکسپریس میں ایم ایس کھوکھر کے مطابق<ref>{{Cite news|title=ٹراٹسکی کا قاتل کون؟ - ایکسپریس اردو|url=https://www.express.pk/story/404927/|work=ایکسپریس اردو|date=2015-11-06|access-date=2018-09-16|language=en-US}}</ref>،<blockquote>ٹراٹسکی پر ایک قاتلانہ حملہ مئی 1940ء میں ہوا مگر ٹراٹسکی کی جان بچ گئی مگر جب 20 اگست 1940ء کو 5 بج کر 30 منٹ پر ٹراٹسکی پر رامون مرکیڈور نے ایک بھرپور ارادہ قتل کے ساتھ قاتلانہ حملہ کیا تو ٹراٹسکی شدید زخمی ہو گیا اور اگلے روز یعنی 21 اگست 1940ء کو جاں بحق ہو گیا جب کہ قاتلانہ حملے کے وقت سے دم آخر تک وہ مسلسل بے ہوش ہی رہا۔  ٹراٹسکی کے قاتل کی گرفتاری کے بعد اس کی جیب سے ایک طویل خط ملا جس میں اس نے ٹراٹسکی کو قتل کرنے کی تفصیلات میں بڑے واضح انداز میں تحریر کیا، چنانچہ اس نے لکھا کہ اس کا تعلق بلجیم سے ہے جب کہ اس نے صحافت کی تعلیم فرانس کے خوبصورت شہر پیرس سے حاصل کی تھی۔</blockquote>
 
<blockquote></blockquote><blockquote></blockquote>
 
== حوالہ جات ==
161

ترامیم