"وزیر اعظم بھارت" کے نسخوں کے درمیان فرق

اضافہ مواد
(درستی)
(اضافہ مواد)
 
مئی 1996ء میں راؤ کا عہد ختم ہونے کے بعد بھارت نے تین سال کی مدت میں چار وزرائے اعظم بنائے۔ جن میں دو مرتبہ [[اٹل بہاری واجپائی]]، ایک مرتبہ [[ایچ ڈی دیوے گوڑا]] ( 1 جون 1996ء سے 21 اپریل 1998ء) اور ایک مرتبہ [[اندر کمار گجرال]] ( 21 اپریل 1997ء سے مارچ 1998ء)۔ 1998ء میں منتخب اٹل جی کی حکومت نے کچھ ٹھوس اقدامات کیے جن میں [[پوکرن]] میں پانچ زیر زمین ایٹمی دھماکے شامل تھے۔ <ref>{{Cite web|url=http://www.cnn.com/WORLD/asiapcf/9805/17/india.nuke.tests/|title=India releases pictures of nuclear tests|date=17 مئی 1998|website=[[سی این این]]|publisher=[[Turner Broadcasting System]]|publication-place=[[نئی دہلی]]|access-date=5 اپریل 2018|agency=CNN}}</ref> ان دھماکوں کے جواب میں متعدد مغربی ممالک بشمول [[ریاستہائے متحدہ امریکا]] نے بھارت پر اقتصادی پابندی لگا دی، <ref>{{Cite web|url=http://news.bbc.co.uk/2/hi/special_report/1998/05/98/india_nuclear_testing/92797.stm|title=US imposes sanctions on India|date=13 مئی 1999|website=[[برطانوی نشریاتی ادارہ]]|access-date=5 اپریل 2018}}</ref> لیکن لیکن [[روس]]، [[فرانس]]، [[خلیجی ممالک]] اور دیگر ممالک کی تائید کی وجہ سے یہ پابندی کامیاب نہ ہو سکی ۔<ref>{{Cite journal|last=Morrow|first=Daniel|last2=Carriere|first2=Michael|date=1 جنوری 1999|title=The economic impacts of the 1998 sanctions on India and Pakistan|url=https://www.tandfonline.com/doi/abs/10.1080/10736709908436775|journal=The Nonproliferation Review|publisher=[[روٹلیج]]|volume=6|issue=4|pages=1–16|doi=10.1080/10736709908436775|issn=1073-6700|access-date=5 اپریل 2018|via=[[Taylor & Francis]]}}</ref><ref>{{Cite book|url=https://www.worldcat.org/oclc/313061697|title=India's nuclear diplomacy after Pokhran II|last=Rai|first=Ajai K.|publisher=[[Longman]]|others=Foreword by [[Ved Prakash Malik]]|year=2009|isbn=978-8131726686|location=[[دہلی]]|oclc=313061697}}</ref> ان دھماکوں کے جواب میں [[پاکستان]] نے بھی ایٹمی تجربات کیے۔ <ref>{{Cite book|url=https://www.worldcat.org/oclc/816041307|title=Eating grass: The making of the Pakistani bomb|last=Khan|first=Feroz Hassan|publisher=[[Stanford University Press]]|year=2012|isbn=978-0-8047-8480-1|location=[[Stanford, California|Stanford]]|pages=281|oclc=816041307}}</ref>
دونوں ملکوں مابین حالات مزید خراب ہونے کے بعد دونون نے اپنے تعلقات سدھارنے کی کوششیں کیں۔ فروری 1999ء میں بھارت اور پاکستان نے [[لاہور اعلامیہ]] پر دستخط کیا جس میں دونوں نے اعلان کیا کہ وہ آپسی شمنی ختم کریں گے اور اپنے اپنے ایٹمی ہتھیار پرامن مقاصد کے لیے استعمال کریں گے۔ <ref>{{Cite web|url=http://www.rediff.com/news/1999/feb/21bus.htm|title=Vajpayee, Sharief sign Lahore Declaration|last=Iype|first=George|date=21 فروری 1999|website=[[Rediff.com]]|publication-place=[[لاہور]]|access-date=5 اپریل 2018}}</ref>1999ء میں [[آل انڈیا اننا دراویڈا مونیترا کازگم]] نے [[نیشنل ڈیموکریٹک الائنس]] کے اپنی حمایت واپس لے لی ۔ <ref>{{Cite web|url=http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/318912.stm|title=Jayalalitha: Actress-turned-politician|date=14 اپریل 1999|website=[[برطانوی نشریاتی ادارہ]]|access-date=5 اپریل 2018}}</ref> اس کے بعد واجپائی حکومت تحریک عدم اعتماد 269-270 سے ہار گئی اور ستم بالائے ستم یہ کہ [[کارگل جنگ]] بھی اسی دوران میں واقع ہوئی۔<ref>{{Cite news|url=http://www.business-standard.com/article/current-affairs/india-was-ready-to-cross-loc-use-nuclear-weapons-in-kargil-war-115120300518_1.html|title=India was ready to cross LoC, use nuclear weapons in Kargil war|date=3 دسمبر 2015|work=[[Business Standard]]|access-date=5 اپریل 2018|publisher=Business Standard Ltd|others=BS Web Team|publication-place=[[نئی دہلی]]|oclc=496280002}}</ref> اس کے معا بعد ہوئے [[1999ء کے عام انتخابات]] میں بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے کو ایوان زیریں کی 545 میں 299 نششتیں حاصل ہوئیں اور مکمل اکثریت کے ساتھ حکومت بنائی۔ <ref>{{Cite web|url=http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/468258.stm|title=Indian election: What they said|date=8 اکتوبر 1999|website=[[برطانوی نشریاتی ادارہ]]|access-date=5 اپریل 2018}}</ref>