"کنوت وکسیل" کے نسخوں کے درمیان فرق

669 بائٹ کا اضافہ ،  2 سال پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
م (خودکار: تبدیلی ربط از Political economics > سیاسی معیشت)
1898 میں اس نے ایک نہایت اہم مقالہ لکھا جس کا نام “شرح سود اور قیمتیں“ تھا۔ اس میں اس نے دو ٹوک الفاظ میں بتایا کہ قدرتی شرح سود(natural rate of interest) اور مصنوعی شرح سود (money rate of interest) کس طرح مختلف ہوتے ہیں۔ اس کا کہنا تھا کہ قدرتی شرح سود مارکیٹ میں طلب و رسد کے اصول کی تابع ہوتی ہے اور خودبخود وجود میں آتی ہے جس سے طلب اور رسد میں توازن برقرار رہتا ہے۔<br/>
اس کے برعکس مصنوعی شرح سود “کیپیٹل مارکیٹ“ کی وجہ سے پیدا ہونے والے بگاڑ کے نتیجے میں وجود میں آتی ہے کیونکہ [[مالیاتی ادارے]]زیادہ سے زیادہ قرض جاری کرنے کے لیے شرح سود گرا دیتے ہیں۔ اور جب بھی مارکیٹ کی مصنوعی شرح سود قدرتی شرح سود سے نیچے جاتی ہے تو معیشت میں عارضی تیزی (economic boom) آ جاتا ہے۔
<!-- This comparison is based on a theory proposed by Knut Wicksell, a 19th century economist. In the Theory of Interest (1898) he proposes that there is an optimal interest rate. Any interest rate other than that rate would have negative consequences for long term economic growth. When rates are too high and above the optimal rate, the economy would languish. Conversely, lower than optimal rates lead to over-borrowing, capital misallocation and speculation eventually resulting in economic hardships. To calculate the optimal rate, Wicksell used market rates of interest as compared to GDP.<ref>[https://realinvestmentadvice.com/the-fifteenth-of-august/]</ref> -->
 
== مزید دیکھیے ==
* [[منسکی مومنٹ]]