"حافظ ابراہیم" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
'''حافظ ابراہیم''' (1871ء تا 1932ء) 20ویں صدی کے [[مصر]] کے [[عربی زبان]] کے شاعر ہیں۔ انہیں “شاعر النیل“ کہا جاتا ہے۔ غریب عوام کی سیاسی آواز بننے کی وجہ سے انہیں عوامی شاعر کے لقب سے بھی یاد کیا جاتا ہے۔ <ref name="Lababidi80">{{Citation|last=Lababidi|first=Lesley|year=2008|title=Cairo's Street Stories: Exploring the City's Statues, Squares, Bridges, Gardens, and Sidewalk Cafés|publisher=[[American University in Cairo Press]]|isbn=977416153X|page=80}}</ref> انہوں نے اپنی شاعری میں عام مصریوں کے مسائل کو موضوع بنایا مثلاً خواتین کے حقوق، غربت، تعلیم اور[[ سلطنت برطانیہ]] کی تنقید وغیرہ۔<ref name="Lababidi80" /><ref name="Kabha">{{Citation|last=Kabha|first=Mustafa|year=2012|chapter=Ibrahim, Hafiz|title=Dictionary of African Biography|publisher=[[اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس]]|isbn=0-19-538207-2|page=127}}</ref>
 
حافظ ابراہیم ان مصری شعرا میں شمار ہوتے ہیں جنہوں نے 19ویں صدی کے اواخر میں کلاسیکی عربی شاعری کو جلا بخشی اور کلاسیکی عروض و قوافی کو استعمال کرتے ہوئے ایسےایک معانی اور تاثرات پیش کئے جو عام کلاسیکی شاعر کے لئے بالکل انجان تھے۔ حافظ ابراہیم کو سیاسی اور سماجی شاعر کہا جاتا ہے۔
 
== ابتدائی زندگی ==
* لي كساء أنعم بہ من كساء۔<ref name="qasaed" />
* قل للرئيس ادام اللہ دولتہ (Tell the President that God has extended the life of his state)۔<ref name="qasaed" />
* [[وکٹر ہیوگو]] کی ''[[بد نصیب (ناول)]]'' کا ترجمہ، 1903<ref>Abdellah Touhami, ''Étude de la traduction des Misérables (Victor Hugo) par Hafiz Ibrahim''، Université de la Sorbonne nouvelle, 1986</ref>
 
== حوالہ جات ==