"مالوہ" کے نسخوں کے درمیان فرق

16 بائٹ کا ازالہ ،  2 سال پہلے
م
عددی ترمیم
مکوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
(ٹیگ: بصری خانہ ترمیم ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
م (عددی ترمیم)
(ٹیگ: بصری خانہ ترمیم ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
جب سن 712 ء میں راجا رام دیو نے مالوہ پر اقتدار قائم کرلیا ۔ اس درمیان مصر سے اندور آکر سید سمان بوم نے مالوہ پر قابض رہ کر 70 سال تک حکمرانی کی ۔اس کے بعد مالوہ پر چوہان خاندان نے حکمرانی قائم کرلی ۔ راجا مالدیو چوہان کے دوران حکومت شیخ سلطان غزنوی نے حملہ کرکے مالوہ پر اقتدار قائم کرلیا ۔اس کے انتقال کے بعد اس کے بیٹے علاؤالدین کی کمسنی کی وجہ سے اس کے دیوان دھرم راج نے حکمرانی قائم کرلی۔ بیس سال بعد جوان ہوجانے پر علاؤ الدین نے دھرم راج کو قتل کر کے اقتدار حاصل کرلیا ۔ علاؤالدین نے بیس سال تک مالوہ پر حکومت کی ۔ اس کے بعد اس کا بیٹا کمال الدین بارہ سال تک حکمراں رہا ۔اس کے بعد راجا بیر سین نے اقتدار حاصل کرلیا ۔اس دور میں ایک پٹھان مالوہ آیااور کچھ مقامی لوگوں کی حمایت سے راجا کوشکار گاہ میں لے جا کر قتل کردیا اور جلال ا لدین نام سے خود سلطان (بادشاہ) بن گیا ۔ اس نے 22 سال حکومت کی اس کی موت کے بعد اس کا بیٹا عالم شاہ نے حکمرانی کی۔ اس دوران راجہ بیرسین کے رشتہ دار کھڈک سین نے عالم شاہ کو قتل کر کے اقتدار پر قبضہ جمالیا ۔اس کے بعد راجا مکت سین نے مالوہ پر راج کیا ۔ اس دور میں دکن سے بہادر شاہ نامی ایک شخص نے حملہ کرکے سکت سیین کو مارکر برسراقتدار ہوگیا ۔ بہادر شاہ نے زبردست فوج بناکر دہلی پر ہی حملہ کردیا لیکن دہلی کے سلطان شہاب الدین غوری نے اسے ہراکر مالوہ پر قبضہ کرلیا ۔ اس سے قبل پرتھوی راج کو بھی شکست خوردہ ہونا پڑا تھا ۔ حقیقت میں مالوہ پر بیرونی مسلمانوں کے ذریعہ حملہ کر کے بار بار برسر اقتدار ہونے پر بیشتر وقت دہلی سلطانت کے ماتحت رہا ۔ بیچ بیچ میں ہندو راجا بھی برسر اقتدارہوتے رہے۔
 
917 ء میں راجا بلہاڑی پر مارمالوہ کا مہاراجا ہوا ۔ برے بڑے راجا ، مہاراجا اس کا احترام کرتے تھے ۔ مالوہ پر پرمارکنبہ کا دبدبہ رہا ۔ 1010 ء میں پھر سے راجا بھوج پر مار (دوم) مالوہ پر برسر اقتدار ہوا ۔ 1055 ء میں کلیان کا راجا سومیشور (اول) مالوہ پرحملہ کر کے راجا بھوج کو ہراکر برسر اقتدار ہوگیا ۔ اس کنبہ کا آخری راجا دیوپال تھا ۔ 1233 ء میں سلطان التمش مالوہ پر حملہ کر کے فلسہ (اجینی) کو جیت کر دہلی چلا گیا ۔ [[Tel:12801310|12801280ء-1310]] ء1310ء تک راجا بھوج (سوم ) برسر اقتدار رہا۔ 1283 ء میں رتھمپور کے راجا حمیر نے مالوہ پر حملہ کیا جس سے ریاست ٹکڑے ٹکڑے ہوگئی ۔ 1305 ء میں راجا مہلک دیو اور اس کے وزیر کوکا نے مالوہ میں خود مختارحکومت قائم کرلی جو ناکام رہی ۔ مہلک دیو مالوہ کا آخری ہندو راجاتھا ۔
 
== مالوہ پر مغلوں کی حکمرانی ==
316

ترامیم