"دہشت گردی" کے نسخوں کے درمیان فرق

3,443 بائٹ کا اضافہ ،  2 سال پہلے
* 26 فروری کو راولپنڈی میں شاہ نجف مسجد میں نقاب پوش بندوق برداروں کے ایک گروہ کی بلااشتعال فائرنگ سے 11 شیعہ نمازی ہلاک ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002</ref>
 
* 17 مارچ 2002 کو اسلام آباد میں ڈپلومیٹک انکلیو میں ایک پروٹسٹنٹ چرچ پر دستی بم حملے میں ایک امریکی سفارت کار کی اہلیہ اور بیٹی سمیت پانچ افراد ہلاک اور 40 سے زیادہ زخمی ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002</ref>
 
* 7 مئی 2002 کو لاہور کے شہر اقبال ٹاؤن میں مذہبی اسکالر پروفیسر ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ملک ، ان کے ڈرائیور اور ایک پولیس اہلکار کو دو بندوق برداروں نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002</ref>
 
* 8 مئی کو2002 کراچی میں شیرٹنشیراٹن ہوٹل کے قریب بس بم دھماکے میں 11 فرانسیسی اور 3 پاکستانی ہلاک ہو گئے۔ہوگئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_20022002_Karachi_bus_bombing</ref>
 
* 14 جون 2002 کو کراچی میں امریکی قونصلیٹ کے محافظوں کے قریب ایک طاقتور کار بم پھٹا جس میں 12 افراد ہلاک اور 50 سے زیادہ زخمی ہوگئے۔ قونصل خانے کی بیرونی دیوار کا ایک حصہ اڑا دیا گیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002#cite_note-6</ref>
 
* 13 جولائی 2002 کو مانسہرہ ضلع میں آثار قدیمہ کے قریب حملے میں نو غیر ملکی سیاح اور تین پاکستانی شہری زخمی ہوگئے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/world/south_asia/2126786.stm</ref>
 
* 5 اگست 2002 کو مری کے پہاڑی سیاحت میں غیر ملکی طلباء کے لئے مشنری اسکول پر بندوق بردار حملے میں 6 افراد ہلاک اور چار زخمی ہوگئے۔ یہ حملہ چار بندوق برداروں نے کیا ، جب انہوں نے اندھا دھند فائرنگ شروع کردی ، تاہم ہلاک ہونے والوں میں کوئی شاگرد شامل نہیں تھا ، یہ سب اسکول میں پاکستانی گارڈز اور ملازمین تھے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/2173184.stm</ref>
 
* 9 اگست 2002 کو شمالی پنجاب کے شہر ٹیکسلا میں ٹیکسلا کرسچن اسپتال میں چرچ پر دہشت گردوں کے حملے میں 3 نرسیں اور ایک حملہ آور ہلاک ہوگئے جبکہ 25 زخمی ہوگئے۔<ref>https://www.dawn.com/news/52044/three-nurses-killed-in-taxila-chapel-attack</ref>
 
* 25 ستمبر2002 کو مسلح افراد نے کراچی میں ایک عیسائی فلاحی تنظیم کے دفاتر پر دھاوا بول دیا ، دفتر کے سات کارکنوں کو قریبی حدود میں سر میں گولی مارنے سے پہلے اپنی کرسیوں سے باندھ دیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002#cite_note-10</ref>
 
* 16 اکتوبر2002 کو پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں پارسل بم دھماکوں کے سلسلے میں آٹھ سے زیادہ افراد زخمی ہوگئے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/2332779.stm</ref>
 
* 15 نومبر 2002 کو سندھ کے شہر حیدرآباد میں ایک بس میں دھماکے کے نتیجے میں دو افراد ہلاک اور کم از کم نو دیگر زخمی ہوگئے۔<ref>https://www.cbc.ca/news/world/bus-explosion-in-pakistan-kills-two-1.331248</ref>
 
* 5 دسمبر2002 کو کراچی شہر میں مقدونیائی اعزازی قونصل خانے پر حملے میں تین افراد ہلاک ہوگئے۔ دفتر میں دھماکے سے پہلے ہلاک ہونے والے - تمام پاکستانی - بندھے ہوئے تھے ، گھات لگائے اور مارے گئے تھے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/2544935.stm</ref>
 
* 25 دسمبر 2002 کو پاکستان کے وسطی صوبہ پنجاب میں نامعلوم حملہ آوروں نے ایک پریسبیٹیرین چرچ پر دستی بم پھینکا ، جس میں تین کمسن بچیاں جاں بحق ہوگئیں۔ سیالکوٹ کے قریب ڈسکہ پر حملے میں کم از کم 12 دیگر زخمی ہوگئے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/2605839.stm</ref>
 
 
 
* 7 مئی کو لاہور کے شہر اقبال ٹاؤن میں مذہبی اسکالر پروفیسر ڈاکٹر غلام مرتضیٰ ملک ، ان کے ڈرائیور اور ایک پولیس اہلکار کو دو بندوق برداروں نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002</ref>
 
* 8 مئی کو کراچی میں شیرٹن ہوٹل کے قریب بس بم دھماکے میں 11 فرانسیسی اور 3 پاکستانی ہلاک ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2002</ref>
 
 
720

ترامیم