"دہشت گردی" کے نسخوں کے درمیان فرق

11 بائٹ کا اضافہ ،  1 سال پہلے
م
خودکار: درستی املا ← کر دیا، \1 رہے، ہو گئے؛ تزئینی تبدیلیاں
م (خودکار: درستی املا ← کر دیا، \1 رہے، ہو گئے؛ تزئینی تبدیلیاں)
* 3 فروری 2009 کو منگل کی شام ڈیرہ اسماعیل خان ضلع کے محلہ جوگین والا میں سنی مسجد پر دستی بم کے حملے میں ایک شخص ہلاک اور 18 زخمی ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2009</ref>
 
* 5 فروری 2009 کو جمعرات کے روز ڈیرہ غازیخان مسجد کے باہر شیعہ نمازیوں کے ہجوم میں ایک مشتبہ خودکش بم دھماکے میں 32 افراد ہلاک ہوگئے۔ہو گئے۔ پولیس نے بتایا کہ اس دھماکے میں ایک مذہبی اجتماع سے کچھ دیر قبل ، اندھیرے کے بعد الحسینیہ مسجد میں داخل ہونے والے درجنوں افراد کو نشانہ بنایا گیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2009</ref>
 
* 7 فروری 2009 کو خیبر پختون خواہ کے قریب پنجاب کے ضلع میانوالی میں ایک چوکی پر حملے میں کم از کم سات اہلکار ہلاک ہوگئے۔ہو گئے۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/7876188.stm</ref>
 
* 11 فروری 2009 کو عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے صوبائی قانون ساز عالم زیب خان بدھ کے روز ریموٹ کنٹرول دھماکے میں ہلاک اور 8 افراد زخمی ہوگئے۔ہو گئے۔ یہ بم پشاور میں دلازک روڈ پر مقتول ایم پی اے کی رہائش گاہ کے قریب کھڑی موٹرسائیکل پر نصب تھا۔ ایک سال سے بھی کم عرصے میں یہ اے این پی پر چھٹا حملہ تھا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2009</ref>
 
* 17 فروری 2009 کو شمال مغربی پاکستان میں ایک سرکاری اہلکار کے گھر کے باہر پھٹنے والے کار بم دھماکے میں کم از کم تین افراد ہلاک ہوگئے۔ہو گئے۔ بمبار نے پشاور شہر کے قریب نواحی علاقے بایزید خیل میں طالبان مخالف میئر کو نشانہ بنایا۔ وہ بچ گیا لیکن متعدد افراد کو چوٹ پہنچی۔<ref>http://news.bbc.co.uk/2/hi/south_asia/7894584.stm</ref>
 
* 20 فروری 2009 کو ڈیرہ اسماعیل خان میں جمعہ کے روز کرفیو نافذ کردیاکر دیا گیا تھا اور فوج نے ہنگاموں کو روکا، قبل ازیں جنوبی ڈیرہ اسماعیل خان ضلع میں ایک خودکش بمبار نے کم از کم 30 شیعہوں کو ہلاک اور 157 کو زخمی کردیاکر دیا تھا۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ شیعہ رہنما شیر زمان کی آخری رسومات پر دھماکے کے بعد جب فائرنگ کی گئی تو پولیس ’بھاگ گئی‘ شیعہ رہنما شیر زمان کو ایک دن پہلے ہی فائرنگ کر کے ہلاک کردیاکر دیا گیا تھا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/February_2009_Dera_Ismail_Khan_suicide_bombing</ref>
 
* 2 مارچ 2009 کو پیر کے روز بلوچستان کے ضلع پشین میں لڑکیوں کے ایک مذہبی اسکول میں خودکش بمبار نے پانچ افراد کو ہلاک اور 12 کو زخمی کردیا۔کر دیا۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2009</ref>
 
* 3 مارچ 2009 کو قذافی اسٹیڈیم کے قریب ، لاہور میں اسٹیڈیم کے قریب ، دو بسوں میں سری لنکن کرکٹرز اور عہدیداروں کو لے جانے والے قافلے پر 12 بندوق برداروں نے فائرنگ کردی۔ کرکٹرز دوسرے ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن پاکستانی کرکٹ ٹیم کے خلاف کھیلنے جارہےجا رہے تھے۔ سری لنکن کرکٹ ٹیم کے چھ ارکان زخمی ہوئے۔ چھ پاکستانی پولیس اہلکار اور دو عام شہری ہلاک ہوگئے۔ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/2009_attack_on_the_Sri_Lanka_national_cricket_team</ref>
 
* 7 مارچ 2007 کو پشاور میں بم سے بھری گاڑی پھٹ گئی جب پولیس نے لاش کو کھینچنے کی کوشش کی تو آٹھ افراد ہلاک اور پانچ زخمی ہوگئے۔ہو گئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں سات پولیس اہلکار تھے جبکہ دوسرا راہگیر تھا۔ ایک اور واقعے میں ، درہ آدم خیل قصبے میں سڑک کنارے نصب بم دھماکے میں تین شہری ہلاک اور چار فوجی زخمی ہوگئے۔ہو گئے۔<ref>https://en.wikipedia.org/wiki/Terrorist_incidents_in_Pakistan_in_2009</ref>
 
 
111,622

ترامیم