"بازنطینی سلطنت" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
 
== سلطنت عثمانیہ و فتح قسطنطنیہ
قدیم باز نطینی سلطنت کے تمام ایشیائی ممالک پر عثمانی قابض ہو گئے تھے، لہزالہٰذا یورپ میں بھی صرف قسطنطنیہ اور اس کے مضافات اس میں شامل ہونا باقی تھے،سلطنتتھے، عثمانیہسلطنت ،عثمانیہ، قسطنطنیہ کےکی فاتحفتح کے بغیر ادھورےادھوری تھی,
ایک اُربان (Urban) نامی توپ خانے کا ماہر تھا بھاگ کر سلطنت عثمانیہ کے علاقوں میں چلا آیا، اس نے سلطان کو ایک بہترین توپ بنا کر دی، جس کے سنگی گولوں کا قطر ڈھائی فٹ تھا، ( بہ حوالہ ، سلطنت عثمانیہ جلد اول ص 99) 26 ربیع الاول 857ھ بہ مطابق 6 اپریل 1453 ء کو زبردست محاصرہ کے آغاز کر دیا گیا مسلسل انتھک محنت اور جان فشانی کے بعد 29 مئی 1453 ء 20 جمادی الاول کو بلاخر قسطنطنیہ فتحیاب ہوا۔
( بہ حوالہ ، سلطنت عثمانیہ جلد اول ص 99)
26 ربیع الاول 857ھ بہ مطابق 6 اپریل 1453 ء کو زبردست محاصرہ کے آغاز کردیا گیا مسلسل انتھک محنت اور جان فشانی کے بعد 29 مئی 1453 ء 20 جمادی الاول کو بلاخر قسطنطنیہ فتحیاب ہوا،
 
== عواقب و نتائج ==