"عبد القادر جیلانی" کے نسخوں کے درمیان فرق

1۔ شیخ عبد القادر جیلانی کی ولادت سے چھ سال قبل [[شیخ ابواحمد عبداللہ|حضرت شیخ ابواحمد عبداللہ بن علی بن موسیٰ]] نے فرمایا کہ میں گواہی دیتاہوں کہ عنقریب ایک ایسی ہستی آنے والی ہے جس کا فرمان ہوگا کہ
<div style='text-align: center;'>
'''قدمی ھذا علی رقبۃ کل ولی اللہ''' <br/>'''کہ میرا قدم تمام اولیاء اللہ کی گردن پر ہے۔'''<ref name="پیشن گوئیاں">[http://www.islamicacademy.org/html/Books/Auliyah/Gause_Azam/gaus_3.htm اکابرین{{زیر}} '''اسلام کی عبد القادر جیلانی کے لیے پیشن گوئیاں''']</ref>
</div>
2۔[[حضرت شیخ عقیل سنجی]] سے پوچھا گیا کہ اس زمانے کے قطب کون ہیں؟ فرمایا، اس زمانے کا قطب مدینہ منورہ میں پوشیدہ ہے۔ سوائے اولیاء اللہ کے اُسے کوئی نہیں جانتا۔ پھر عراق کی طرف اشارہ کر کے فرمایا کہ اس طرف سے ایک عجمی نوجوان ظاہر ہوگا۔ وہ بغداد میں وعظ کرے گا۔ اس کی کرامتوں کو ہر خاص و عام جان لے گا اور وہ فرمائے گا کہ
<div style='text-align: center;'>
'''قدمی ھذا علی رقبۃ کل ولی اللہ''' <br/>'''کہ میرا قدم تمام اولیاء اللہ کی گردن پر ہے۔'''<ref name="پیشن گوئیاں"/> </div>
[[سالک السالکین]] میں ہے کہ جب عبد القادر جیلانی کو مرتبہء غوثیت و مقام محبوبیت سے نوازا گیا تو ایک دن جمعہ کی نماز میں خطبہ دیتے وقت اچانک آپ پر استغراقی کیفیت طاری ہو گئی اور اسی وقت زبان{{زیر}} فیض سے یہ کلمات جاری ہوئے؛
<div style='text-align: center;'>
'''قدمی ھذا علی رقبۃ کل ولی اللہ''' <br/>'''کہ میرا قدم تمام اولیاء اللہ کی گردن پر ہے۔ہے'''۔ </div>
معا{{دوزبر}} منادیء غیب نے تمام عالم میں ندا کردی کہ جمیع اولیاء اللہ اطاعت{{زیر}} غوث{{زیر}} پاک کریں۔ یہ سنتے ہی جملہ اولیاء اللہ جو زندہ تھے یا پردہ کر چکے تھے سب نے گردنیں جھکا دیں۔ (تلخیض بہجت الاسرار) <ref name="پیشن گوئیاں"/>
{{تصوف}}
1,443

ترامیم