"خدیجہ بنت خویلد" کے نسخوں کے درمیان فرق

م (پیغمبر اکرمؐ سے شادی | مختلف حواله جات)
خدیجہ کے والد اپنے قبیلے میں نہایت معزز شخص تھے۔ [[مکہ]] آکر اقامت کی، عبد الدارین ابن قصی کے جوان کے ابن عم تھے، حلیف بنے اور یہیں فاطمہ بنت زائدہ سے شادی کی، جن کے بطن سے [[عام الفیل]] سے 15 سال قبل خدیجہ پیدا ہوئیں، <ref>طبقات ابن سعد، ج 8 ص 10</ref>
سنِ شعور کو پہنچیں تو اپنے پاکیزہ [[اخلاق]] کی بنا پر طاہرہ<ref>اصابہ، ج 8 ص 60</ref>کے لقب سے مشہور ہوئیں۔
==شجرہ نسب==
خدیجہ بنت خویلد بن اسد بن عبد العزی بن قصی بن کلاب بن مرہ بن کعب بن کوی بن غالب بن فہر بن مالک بن نضر بن کنانہ۔
حضرت خدیجہ کی والدہ کا نام فاطمہ بنت زید بن اصم بن رواحہ بن حضر بن عدب بن معیص بن عامر بن لوی تھا۔ فاطمہ کی ماں کا نام ہالہ بنت عبدمناف بن حارث بن عبد بن منقد بن عمر بن معیص بن عامر بن لوی تھا۔ ہالہ کی والدہ کا نام فلانہ (یا بقول ابن ہشام قلابہ) بنت سعید بن سعد بن سہم بن عمر بن ہصیص بن کعب بن لوی تھا۔ فلانہ کی ماں کا نام عاتکہ بنت عبدالعزی بن قصی تھا۔ عاتکہ کی ماں کا نام ریطہ بنت کعب بن سعد بن تیم بن مرہ بن کعب بن لوی تھا۔ ریطہ کی ماں کا نام فیلہ بنت حذافہ بن جمح بن عمرو بن ہصیص بن کعب بن لوی تھا۔ فیلہ کی ماں کا نام امیمہ بن عامر بنت حارث بن فہر تھا۔ امیمہ کی ماں قبیلہ خزاعہ کے سعد بن کعب بن عمرو کی بیٹی تھی اور اس کی ماں فلانہ بنت حرب بن حارث بن فہر تھی۔ فلانہ کی ماں کا نام سلمیٰ بنت غالب بن فہر تھا اور سلمی کی ماں محارب بن فہر کی بیٹی تھی۔
 
== نکاح ==
باپ نے ان صفات کا لحاظ رکھ کر شادی کے لیے [[ورقہ بن نوفل]] کو جو برادر زادہ اور [[تورات]] و [[انجیل]] کے بہت بڑے عالم تھے، منتخب کیا، لیکن پھر کسی وجہ سے یہ نسبت نہ ہو سکی اور ابو ہالہ بن بناش تمیمی سے [[نکاح]] ہو گیا۔<ref>استیعاب، ج 2 ص 378</ref><br/>