"ماجد صدیقی" کے نسخوں کے درمیان فرق

8 بائٹ کا ازالہ ،  6 مہینے پہلے
م
 
== شعری رجحان ==
ماجد صدیقی ایک زود گو شاعر تھے انہوں نے اردو، پنجابی اور [[انگریزی زبان|انگریزی]] میں نظم، غزل اور نثر کے 49 مجموعے شائع کیے۔ علاوہ ازیں ان کے 13 مجموعے شائع ہوئے جن میں انہوں نے دوسرے شعرا کا کلام اردو، پنجابی اور انگریزی میں ترجمہ کیا۔ ماجد صدیقی کی شاعری کو کسی خاص ادبی تحریک سے وابستہ نہیں کیا جا سکتا، اگرچہ وہ ترقی پسندانہ رجحانات رکھتے تھے مگر وہ اپنی طرز کے تخلیق کار رہے، ان کا ادبی حلقوں میں آنا جانا نہیں تھا اور ان کا حلقۂِ احباب تقریباً تمام عمر بہت محدود رہا۔ ان کے قریبی دوستوں میں [[ساجد علوی]]، [[اختر امام رضوی]]، [[عابد جعفری]]، [[خاقان خاور]]،خاور، [[آفتاب اقبال شمیم]]، [[سید عارف]] اور [[جمیل آذر]] شامل تھے، اپنے دوستوں میں وہ [[خاقان خاور]] اور [[اختر امام رضوی]] کو بہت عزیز گردانتے تھے۔ ان کی شاعری حقیقت سے قریب تر رہی اور انہوں نے اپنے آپ کو اردو ادب کے روایتی موضوعات اور طرزِ اظہار سے شعوری طور پر دور رکھا۔
 
1978ء میں انہوں نے پنجابی میں نثری نظموں کا ایک مجموعہ ’’[[گُنگے دیاں رمزاں]]‘‘ کے نام سے شائع کیا جو پنجابی میں نثری نظم کا سب سے پہلا مجموعہ ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے 80 کی دہائی میں اردو زبان میں پنجابی کی طرز پر بولیوں کی صنف بھی متعارف کروائی
18,261

ترامیم