"بنی نوع انسان کی مختصر تاریخ" کے نسخوں کے درمیان فرق

کوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
کوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
کوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
}}
'''بنی نوع انسان کی مختصر تاریخ''' ({{lang-he|קיצור תולדות האנושות}}، [قیتصور تولدوت ہا اِنوشوت]، {{lang-en|Sapiens: A Brief History of Humankind}}) [[یووال نوح ہراری]] کی تحریر کردہ ایک کتاب ہے جو سب سے پہلے 2011ء میں [[اسرائیل]] میں [[عبرانی زبان]] میں شائع ہوئی<ref>Harari, Yuval Noah; Vintage (2014). ''Sapiens: A Brief History of Humankind''. {{ISBN|9780099590088}}.</ref> پھر 2014ء میں [[انگریزی زبان]] میں چھپی۔<ref name=Guardian_strawson>{{cite news|last1=Strawson|first1=Galen|title=Sapiens: A Brief History of Humankind by Yuval Noah Harari – review|url=https://www.theguardian.com/books/2014/sep/11/sapiens-brief-history-humankind-yuval-noah-harari-review|accessdate=29 October 2014|work=The Guardian|date=11 September 2014}}</ref><ref name=Telegraph_Payne>{{cite news|last1=Payne|first1=Tom|title=Sapiens: A Brief History of Humankind by Yuval Noah Harari, review: 'urgent questions'|url=https://www.telegraph.co.uk/culture/books/bookreviews/11120947/Sapiens-a-Brief-History-of-Humankind-by-Yuval-Noah-Harari-review-urgent-questions.html|accessdate=29 October 2014|work=The Telegraph|date=26 September 2014}}</ref> کتاب میں نوعِ انسانی کی تاریخ، [[سنگی دور|پتھروں کے دور]] کی قدیم انسانی انواع سے لے کر اکیسویں صدی عیسوی کے موجودہ انسانوں تک کے [[نظریۂ ارتقا|ارتقا]] پر روشنی ڈالی گئی ہے۔ یہ کتاب [[علوم فطریہ|فطری علوم]] بالخصوص [[ارتقائی حیاتیات]] پر مشتمل ہے۔
اس کتاب میں ہراری نے لگ بھگ 70،000 سال پہلے ہونے والے “علمی انقلاب” کے بارے میں لکھا ہے جب ہومو سیپینز نے حریف نیندرٹھالوں کی سرکوبی کی ، زبان کی ہنر اور ڈھانچے والے معاشرے تیار کیے ، اور زرعی انقلاب کی مدد سے اور سائنسی طریقہ کار کے ذریعہ تیز ہوا ، جس نے انسانوں کو اجازت دی ان کے ماحول پر مہارت حاصل کرنے کے قریب ان کی کتابیں مستقبل کے بائیوٹیکنالوجی دنیا کے ممکنہ نتائج کا بھی جائزہ لیتی ہیں جس میں ذہین حیاتیاتی حیاتیات کو اپنی تخلیقات سے آگے نکلتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ “ہومو سیپینز جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ وہ ایک صدی میں غائب ہوجائیں گے”۔
 
اس کتاب کے حوالے سے ملی جلی آرا ہیں۔ کتاب سے متعلق محققین کا موضوع بحث بہت زیادہ تنقیدی ہے، اس کے باوجود عوام کا عمومی ردِ عمل مثبت ہے۔
==اردو تراجم==