"منت اللہ رحمانی" کے نسخوں کے درمیان فرق

2,357 بائٹ کا اضافہ ،  10 مہینے پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
م (خودکار:تبدیلی ربط V3.4)
'''مولانا سید منت اللہ رحمانی''' ﴿7 اپریل 1913۔۲۰ مارچ ۱۹۹۱﴾ [[بھارت]] کے [[صوبہ]] [[بہار]] کے ایک ممتاز و مشہورجلیل القدر سنی عالم و مشہور مسلم رہنما تھے آپ [[مسلم پرسنل لا بورڈ]] کے فاؤنڈر ممبر [[امارت شرعیہ بہار اڑیسہ و جھار کھنڈ]] کے امیر شریعت و بورڈ کے پہلے جنرل سیکریٹریری تھےاور تا عمر [[خانقاہ رحمانی مونگیر]] کے سجادہ نشیں تھے۔
== ابتدائی تعارف ==
'''مولانا منت اللہ رحمانی''' 7 اپریل 1913 کو [[بہار]] کے [[مونگیر]] میں پیدا ہوئے تھے۔ہوئے۔<ref name="nooralam">{{cite book |author1=[[نور عالم خلیل امینی]] |title=Pas-e-Marg-e-Zindah |publisher=Idara Ilm-o-Adab |location=[[دیوبند]] |page=214-238 |edition=5th, February 2017 |language=Urdu |chapter=Mawlāna Jalīl-ul-Qadar Aalim-o-Qā'id Amīr-e-Shariat: Hadhrat Mawlāna Sayyid Minatullah Rahmani - Chand Yaadein|trans-chapter=The Great Scholar and Leader, Amīr-e-Shariat: Hadhrat Mawlāna Sayyid Minatullah Rahmani - Few Memories}}</ref> ان کے والد مولانا محمد علی منگیری لکھنو میں ندوۃ العلماء کیکے بانی شخصیت تھے۔<ref name="muhammadalimungeri">{{cite book |author1=Sayyid Muhammad al-Hasani |title=Sirat Hadhrat Mawlāna Sayyid Muhammad Ali Mungeri: Baani Nadwatul Ulama|trans-title=Biography of Mawlāna Sayyid Muhammad Ali Mungeri: The Founder of Nadwatul Ulama |publisher=Majlis Sahafat-o-Nashriyat, [[دار العلوم ندوۃ العلماء]] |location=[[لکھنؤ]] |edition=4th, May 2016 |language=Urdu |quote=The relation has been discussed on page 334}}</ref>
'''مولانا منت اللہ رحمانی''' ﴿7 اپریل 1913۔۲۰ مارچ ۱۹۹۱﴾ بھارت کے صوبہ بہار کے ایک ممتاز و مشہور سنی عالم تھے آپ مسلم پرسنل لا بورڈ کے فاؤنڈر ممبر امارت شرعیہ بہار اڑیسہ و جھار کھنڈ کے امیر شریعت و بورڈ کے پہلے جنرل سیکریٹریری تھے
 
'''مولانا منت اللہ رحمانی''' 7 اپریل 1913 کو بہار کے مونگیر میں پیدا ہوئے تھے۔<ref name="nooralam">{{cite book |author1=[[نور عالم خلیل امینی]] |title=Pas-e-Marg-e-Zindah |publisher=Idara Ilm-o-Adab |location=[[دیوبند]] |page=214-238 |edition=5th, February 2017 |language=Urdu |chapter=Mawlāna Jalīl-ul-Qadar Aalim-o-Qā'id Amīr-e-Shariat: Hadhrat Mawlāna Sayyid Minatullah Rahmani - Chand Yaadein|trans-chapter=The Great Scholar and Leader, Amīr-e-Shariat: Hadhrat Mawlāna Sayyid Minatullah Rahmani - Few Memories}}</ref> ان کے والد مولانا محمد علی منگیری لکھنو میں ندوۃ العلماء کی بانی شخصیت تھے۔<ref name="muhammadalimungeri">{{cite book |author1=Sayyid Muhammad al-Hasani |title=Sirat Hadhrat Mawlāna Sayyid Muhammad Ali Mungeri: Baani Nadwatul Ulama|trans-title=Biography of Mawlāna Sayyid Muhammad Ali Mungeri: The Founder of Nadwatul Ulama |publisher=Majlis Sahafat-o-Nashriyat, [[دار العلوم ندوۃ العلماء]] |location=[[لکھنؤ]] |edition=4th, May 2016 |language=Urdu |quote=The relation has been discussed on page 334}}</ref>
== تعلیم ==
مونگیر میں اپنی ابتدائی تعلیم مکمل کرنے کے بعد ، سید رحمانی نے [[حیدرآباد]] میں [[مفتی عبد اللطیف]] کے ساتھیہاں عربی گرائمر[[گرامر]] ، [[نحو]] اور [[منطق]] کی تعلیم حاصل کی۔ انہوںےانہوں ںے اپنی مزید تعلیم کے لئے ندوات[[ندوۃ العلماء]] لکھنؤ میں داخلہ لیا ، اور چار سال وہاں تعلیم حاصل کی۔ 1349 ہجری میں ، وہ [[دارالعلوم دیوبند]] چلے گئے جہاں انہوں نے [[حسین احمد مدنی]] کے ساتھسے [[صحیح بخاری]] کی تعلیم حاصل کی۔ آپ نے 1352 ہجری میں دارالعلوم مدرسےدیوبند سے گریجویشن کیا۔<ref name="mahbub">{{cite book |last1=Rizwi |first1=Syed Mehboob |translator=Murtaz Husain F Quraishi |authorlink1=Syed Mehboob Rizwi |title= Tarikh Darul Uloom Deoband
|trans-title= History of the Dar al-Ulum Deoband |volume = 2 |publisher=[[دار العلوم دیوبند]] |location=[[دیوبند]] |edition=1981||chapter=Maulana Sayyid Minat Allah Rahmani|pages=121-123}}</ref> ان کے دیگر اساتذہ میں سید [[اصغر حسین دیوبندی]] اور [[محمد شفیع عثمانی]] شامل ہیں۔<ref name="nooralam" />
== قومی خدمات ==
1935 میں ، ابوالحسن[[ابوالمحاسن سجاد]] نے مسلم آزاد پارٹی ﴿Muslim Independent Party﴾ کی بنیاد رکھی اور رحمانی اس کاکے ممبر مقرر ہوے۔ اس کے ذریعہ ، وہ 1937 میں [[مونگیر]] و [[بھاگلپور]] سے [[بہار]] [[قانون ساز اسمبلی]] کے ممبر کے طور پر منتخب بھی ہوئے۔<ref name="nooralam" /> وہ سن 6161611361 ہجری میں خانقاہ رحمانی ، منجرمونگیر کے سجادہ نشین اور سن 5 1955 in میں [[دارالعلوم دیوبند]] کی قانون ساز کونسل کے ممبر کے عہدے پر فائز ہوئے ، ان کیاپنی وفات تک وہ اس عہدے پر فائز رہے۔<ref name="mahbub" /><ref name="nooralam" /> [[قاری محمد طیب]] کے ساتھ ، انہوں نے آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے قیام میں کلیدی کردار ادا کیا اور 28 دسمبر 1972 کو ہونے والے بورڈ کے آغازپہلے اجلاس میں انہیں ہی اس کا پہلا جنرل سکریٹری مقرر کیا گیا۔<ref name="nooralam" /> 1964 میں ، انہوں نے ہندوستان کے مندوب کی حیثیت سے عالمیبین الاقوامی مسلم کانگریس میں حصہ لیا۔<ref name="mahbub" />
 
 
1945 میں ، رحمانی نے [[جامعہ رحمانیہ]] ، جو ہندوستان کے منگرمونگیر میں ایک مشہور مدرسہ ،ہے، دوبارہ قائم کیا۔<ref name="nooralam" /><ref name="2circles">{{cite news |title=Munger’s Jamia Rahmani holds its biennial contests for students |url=http://twocircles.net/2008apr02/munger_s_jamia_rahmani_holds_its_biennial_contests_students.html |accessdate=27 August 2020 |work=[[ٹو سرکلز]] |date=2 April 2008}}</ref>
رحمانی 20 مارچ 1991 کو انتقال کر گئے۔ <ref name="nooralam" />
== وراثت ==
رحمانی کے بیٹے [[محمد ولی رحمانی]] [[رحمانی 30]] کے بانی اور [[آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ]] کے موجودہ [[جنرل سکریٹری]] ہیں۔<ref>{{cite web |title=Officials of the AIMPLB |url=http://www.aimplboard.in/officers.php |website=aimplboard.in |publisher=[[All India Muslim Personal Law Board]] |accessdate=27 August 2020}}</ref><ref name="rahmani">{{cite web |title=Rahmani Mission President |url=http://www.rahmanimission.info/president.html |website=www.rahmanimission.info |accessdate=27 August 2020}}</ref> [[علی گڑھ مسلم یونیورسٹی]] میں ، محمد اظہر نے مولانا منت اللہ رحمانی: زندگی اور مذہبی و فکری خدمات کا تجزیاتی [[مطالعہ]] ﴿Maulana Minnatullah Rahmani: analytical study of his life and religio-intellectual contributions﴾ کے عنوان سے اپنا [[ڈاکٹریٹ]] کا [[مقالہ]] تحریر کیا۔<ref name = "thesis">{{cite thesis |type=PhD |last=Azhar |first=Mohd |date=2005 |title=Maulana Minnatullah Rahmani: analytical study of his life and religio-intellectual contributions|url =https://shodhganga.inflibnet.ac.in/handle/10603/57173 |publisher=Aligarh Muslim University}}</ref> شاہ عمران حسن نے ان کی سیرت لکھی '''حیات رحمانی: مولانا منت اللہ رحمانی کی زندگی کا علمی و تاریخی مطالعہ''' (English: The Life of Rahmani: A Study of Maulana Minatullah Rahmani’s Scholarly and Historical Legacy) اس کتاب پر پروفیسر [[اختر الواسع]] نے مقدمہ تحریر کیا ہے۔ <ref name="milli">{{cite news |author1=Mushtaq Ul Haq Ahmad Sikander |title=Book on Maulana Minnatullah Rahmani |url=https://www.milligazette.com/news/13-books/6066-book-on-maulana-minnatullah-rahmani/ |accessdate=27 August 2020 |work=[[The Milli Gazette]] |date=30 Jan 2013}}</ref>
 
== حوالہ جات ==
فہرست حوالہ
93

ترامیم