"امام قلی خان" کے نسخوں کے درمیان فرق

374 بائٹ کا اضافہ ،  11 مہینے پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل موبائل ویب ترمیم)
 
امام قلی خان [[1644ء|1644]] میں [[مکہ]] میں فوت ہوئے اور [[مدینہ منورہ|مدینہ]] میں دفن ہوئے۔ کچھ ذرائع کے مطابق ، خان کے اعزاز میں یادگار نماز (جنازہ) میں 600 ہزار عازمین شریک ہوئے۔
*-اولاد
امام قلی خان اور نادر محمد دو بھاہی تھے ان کے ولددین محمد ولد جانی بیگ ولداوزبیک خان ولدتوغریلچہ ولد منگو تیمور یہ تین بھاہی تھے .ان کے ولد ہلاکو خان چار بھاہی تھے اور یہ تولی خان کے بیتے تھے تولی خان چار بھاہی تھے اور یہ چنگیز خان کے بیتے تھے
*امام قلی خان کے دو بیتے تھے نور قلی اور منگو خان
لیہ خان کے دو بیتے تھے منگتا خان,غریب خان
اور ماناں خان کے بھی دو بیتے تھےعلم دین,غلام دین, علم دین کا بیتا سخی محمد مغل اور ان کے چھ بیتے تھے سید محمد مغل, گلاب محمد مغل,محمد حسین مغل,عبدلحسین ,بگاہ خان مغل, خوشی محمد مغل
بگاہ خان مغل کےچار بیتے حاجی محمد خان مغل, محمد عظیم مغل, محمد بشیر مغل, محمد خلیل مغل
حاجی محمد خان مغل کے تین بیتے محمد خالد آذاد مغل,محمدعابد مغل,محمد طارق مغل
 
اور غلام دین کا ایک بیتا تھا فقیر محمد ان کا بیتا نذر محمد مغل
* منگو خان کا ایک بیتا تھا نیکا خان اور اس کےتین بیتے تھے.میر بخش,نواب خان,کرم دین,
میر بخش کے چار بیتے تھے
غلام محمد مغل ,دین محمد مغل, صاحب دین,فقیر محمد مغل
غلام محمد مغل کے دو بیتے تھے سنااللہ,غلام نبی مغل کے دو بیتے محمد یاسیں مغل,محمد اسلم مغل
 
== نوٹ ==
گمنام صارف