"محمد بن سلیمان کردی" کے نسخوں کے درمیان فرق

«محمد بن سليمان الكردي» کے ترجمے پر مشتمل نیا مضمون تحریر کیا
محمد بن سليمان الكردي» کے ترجمے پر مشتمل نیا مضمون تحریر کیا)
محمد بن سليمان الكردي» کے ترجمے پر مشتمل نیا مضمون تحریر کیا)
 
=== وہابی سلفی نظریہ کی مخالفت ===
آپ کے شاگردوں میں سے وہابی سلفی نظریہ کا بانی محمد بن عبد الوہاب بھی تھا۔ اس نے مدینہ منورہ میں آپ سے پڑھا۔ آپ نے اس سے اختلاف کیا ہے اور اس کے اسلوبِ دعوت پر تنقید کرتے ہوئے آپ نے اس کو خط لکھا جس میں کہا:<ref name="أعلام من أرض النبوة">{{حوالہ کتاب|title=أعلام من أرض النبوة|publisher=الخزانة الكتبية الحسنية الخاصة|year=1993|location=المدينة، السعودية}}</ref> <ref>{{حوالہ کتاب|title=دعاوى المناوئين لدعوة الشيخ محمد بن عبد الوهاب عرض ونقد|publisher=دار طيبة|year=1989|location=الرياض، السعودية}}</ref>{{اقتباس 2|يا ابن عبد الوهاب سلام على من اتبع الهدى فاني أنصحك لله أن تكفّ لسانك عن المسلمين فإن سمعت من شخص أنه يعتقد تأثير ذلك المستغاث به من دون الله تعالى فعّرفه الصواب، وأبن له الأدلة. على أنّه لا تأثير لغير الله. فان أبي فكفّره حينئذٍ بخصوصه، ولا سبيل لك إلى تكفير السواد الأعظم من المسلمين وأنت شاذّ عن السواد الأعظم. فنسبة الكفر إلى من شذّ عن السواد الأعظم أقرب لأنّهّ اتّبع غير سبيل المؤمنين قال الله تعالى {{قرآن|4|115}} وإنما يأكل الذئب من الغنم القاضية.}}
 
اے ابن عبد الوہاب!
 
اس پر سلام ہو جس نے ہدایت کی پیروی کی
 
اللہ تعالیٰ کی رضا کے لئے میں تمہیں نصیحت کرتا ہوں کہ تم مسلمانوں (کی تکفیر) سے اپنی زبان کو لگام ڈالو۔ اگر تم کسی شخص سے سنو کہ وہ اللہ تعالیٰ کے مقابلے میں اس شخص کے مؤثر ہونے کا عقیدہ رکھتا ہے جس سے وہ استغانہ/فریاد کر رہا ہے تو تم اسے درست بات کی پہچان کراؤ اور اس کے سامنے اس بات کے دلائل رکھو کہ اللہ تعالیٰ کے سوا کوئی مؤثر نہیں پھر بھی اگر وہ نہ مانے تو اس صورت میں خاص اس شخص کی تکفیر کرو لیکن مسلمانوں کے سوادِ اعظم کی تکفیر کی کوئی گنجائش نہیں۔ تم سواد اعظم سے جدا ہو اور جو شخص سواد اعظم سے جدا ہو اس کی طرف کفر کی نسبت زیادہ قریب ہے کیونکہ اس نے مسلمانوں کے راستے سے جدا راستہ اختیار کیا ہے، اللہ تعالیٰ فرماتا ہے:
 
{{قرآن|4|115}}{{اقتباس 2|يا ابن عبد الوهاب سلام على من اتبع الهدى فاني أنصحك لله أن تكفّ لسانك عن المسلمين فإن سمعت من شخص أنه يعتقد تأثير ذلك المستغاث به من دون الله تعالى فعّرفه الصواب، وأبن له الأدلة. على أنّه لا تأثير لغير الله. فان أبي فكفّره حينئذٍ بخصوصه، ولا سبيل لك إلى تكفير السواد الأعظم من المسلمين وأنت شاذّ عن السواد الأعظم. فنسبة الكفر إلى من شذّ عن السواد الأعظم أقرب لأنّهّ اتّبع غير سبيل المؤمنين قال الله تعالى {{قرآن|4|115}} وإنما يأكل الذئب من الغنم القاضية.}}
اور بھیڑیا اسی بکری کو کھاتا ہے جو ریوڑ سے جدا ہتی ہے۔
[[زمرہ:حفاظ قرآن]]
[[زمرہ:راویان حدیث]]