"اسما برلاس" کے نسخوں کے درمیان فرق

1 بائٹ کا اضافہ ،  1 مہینہ پہلے
1 مآخذ کو بحال کرکے 0 پر مردہ ربط کا ٹیگ لگایا گیا) #IABot (v2.0.8
م (خودکار: اضافہ زمرہ جات +ترتیب (14.9 core): + زمرہ:نسائیت پسند مسلمان)
(1 مآخذ کو بحال کرکے 0 پر مردہ ربط کا ٹیگ لگایا گیا) #IABot (v2.0.8)
== تحقیق ==
اسما برلاس نے مسلمانوں کے مذہبی علم پیدا کرنے کی طرز پہ تحقیق کی ہے، خاص طور پر قرآن کی توجیہہ تفسیر، اس موضوع پر جو انہوں نے اپنی کتاب "اسلام میں عورتوں کو ماننا": قرآن مجید کی غیر پڑھائی جانیوالی تشریحات " میں کھوج کی ہے۔<ref>[http://www.utexas.edu/utpress/excerpts/exbarbel.html "Believing Women" in Islam]</ref>
وہ اپنے نظریات اور اسلام کی ترجمانی کو " اسلامی حقوق نسواں " کے نام سے مسترد کرتی ہیں، جب تک کہ اس اصطلاح کی وضاحت " صنفی مساوات اور معاشرتی انصاف کے ایک مباحثہ سے نا کی جائے۔ جو قرآن سے اس کی تفہیم حاصل کرتی ہے اور حقوق کے عملی عمل کو تلاش کرتی ہے اور عوامی نوعیت کے تسلسل میں تمام انسانوں کے وجود کے انفرادیت کے لئے انصاف کا تقاضہ کرتی ہے۔"<ref>[http://www.asmabarlas.com/TALKS/20040112_UToronto.pdf The Qur’an, Sexual Equality, and Feminism] {{wayback|url=http://www.asmabarlas.com/TALKS/20040112_UToronto.pdf |date=20160304064110 }} University of Toronto, 12 January 2004</ref>
اپنی پہلی کتاب، "جمہوریت، قوم پرستی اور فرقہ واریت: جنوبی ایشیا میں نوآبادیاتی میراث" میں اسما برلاس نے برطانوی استعمار سے پاکستانی سیاست میں عسکریت پسندی کے تعلقات کے بارے میں لکھا۔