"ایران میں سودی معیشت کے خلاف فتاویٰ" کے نسخوں کے درمیان فرق

م
م
 
=== آیت اللہ العظمیٰ حسین مظاہری ===
جنوری 2019ء میں آیت الله حسین مظاہری نے کہا:
 
”افسوس ہے کہ سود لینا اور سود دینا ایک عادت بن چکی ہے۔ بعض لوگ شرعی بہانے لگا کر ایسے سود کھاتے ہیں کہ مثلاً چوہے کو پانی سے دھو کر حلال قرار دے دیا جائے۔ اسی طرح رشوت لینا اور دینا بھی نظام میں سرایت کر چکا ہے۔ معمولاً کوئی کام رشوت کے بغیر نہیں ہوتا۔ کوئی گرہ رشوت کے بغیر نہیں کھلتی، نہ وکوئی  فائل پہیے لگائے بغیر آگے جاتی ہے“۔<ref>{{Cite web|url=https://www.hawzahnews.com/news/474885/%D8%B1%D8%A8%D8%A7%D8%AE%D9%88%D8%B1%D8%AF%D9%86-%D9%88-%D8%B1%D8%A8%D8%A7%D8%AF%D8%A7%D8%AF%D9%86-%D8%B9%D8%A7%D8%AF%DB%8C-%D8%B4%D8%AF%D9%87-%D8%A7%D8%B3%D8%AA|title=رباخوردن و ربادادن عادی شده است}}</ref>
731

ترامیم