"بندو خان" کے نسخوں کے درمیان فرق

1 بائٹ کا ازالہ ،  10 مہینے پہلے
م
خودکار: درستی املا ← تمغا، ہو گئے، جنھوں، ہو گیا، کر دیا؛ تزئینی تبدیلیاں
(1 مآخذ کو بحال کرکے 0 پر مردہ ربط کا ٹیگ لگایا گیا) #IABot (v2.0.8)
م (خودکار: درستی املا ← تمغا، ہو گئے، جنھوں، ہو گیا، کر دیا؛ تزئینی تبدیلیاں)
 
{{خانہ معلومات شخصیت}}
 
استاد '''بندو خان''' [[1880ء]] میں [[دہلی]] میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد علی جان خان بھی سارنگی بجاتے تھے اور استاد ممّن خان، جنہوںجنھوں نے سر ساگر ایجاد کیا ان کے ماموں تھے۔ استاد بندو خان نے سالہا سال اپنے ماموں سے سارنگی کے اسرار و رموز سیکھے پھر وہ ایک ملنگ میاں احمد شاہ کے شاگرد ہوئے جنہوںجنھوں نے انتہائی شفقت اور محبت سے بندو خان کو اپنے علم کا سمندر منتقل کردیا۔کر دیا۔ <ref name=Sangeet>[http://www.itcsra.org/TributeMaestro.aspx?Tributeid=36 'Tribute to a Maestro' - Profile of sarangi player Bundu Khan] {{wayback|url=http://www.itcsra.org/TributeMaestro.aspx?Tributeid=36 |date=20200806095747 }}, ITC Sangeet Research Academy website, Retrieved 20 August 2018</ref> قیام پاکستان کے بعد بندو خان [[پاکستان]] چلے آئے اور [[ریڈیو پاکستان]] سے وابستہ ہوگئے۔ہو گئے۔ <ref>[http://www.the-south-asian.com/april2001/Pakistan%20Music-Classical.htm Noted sarangi player of Pakistan&ndash;BunduPakistan–Bundu Khan on the-south-asian.com website], Published April 2001, Retrieved 20 August 2018</ref> ایک مختصر سی علالت کے بعد 13 جنوری 1955ء کو ان کا انتقال ہوگیا۔ہو گیا۔
استاد بندو خان کوان کی وفات کے چار برس بعد 1959ء میں صدارتی تمغہتمغا برائے حسن کارکردگی سے نوازا گیا۔ وہ [[کراچی]] میں آسودہ خاک ہیں ۔
== حوالہ جات ==
{{حوالہ جات}}
111,622

ترامیم