"زاہدہ حنا" کے نسخوں کے درمیان فرق

8 بائٹ کا اضافہ ،  1 سال پہلے
م
املا کی اصلاح
کوئی خلاصۂ ترمیم نہیں
م (املا کی اصلاح)
زاہدہ حنا تقسیم ہند کے بعد ہندوستان میں پیدا ہوئیں۔ ان کے والد محمد ابو الخیر بعد ازاں ہجرت کرکے پاکستان چلے گئے اور کراچی میں آباد ہو گئے جہاں زاہدہ حنا کی پرورش ہوئی اور کچھ عرصہ وہ گھر میں ہی زیر تعلیم رہیں۔ ساتویں جماعت سے زاہدہ حنا نے ہیپی ہوم اسکول سے رسمی تعلیم شروع کی <ref>[https://images.dawn.com/news/1177503 Zahida Hina's translated short stories 'The House of Loneliness' launched] Dawn (newspaper)، Updated 9 مئی 2017, Retrieved 22 فروری 2018</ref>۔ 9 سال کی عمر میں زایدہ نے پہلی کہانی لکھی۔
زاہدہ نے کراچی یونیورسٹی سے گریجویشن کی اور ان کا پہلا مضمون ماہنامہ انشا میں ا1962 میں چھپا۔ 1960 کی دہائی میں انھوں نے صحافت کو بطور پیشہ اپنا لیا۔ 1970 میں ان کی شادی مشہور شاعر جون ایلیا سے ہو گئی۔ زاہدہ حنا نے روزنامہ جنگ میں 1988 سے 2005 تک کام کیا اور پھر وہ روزنامہ ایکسپریس، پاکستان سے منسلک ہو گئیں۔ زاہدہ حنا نے وائس آف امریکا، بی بی سی اردو اور ریڈیو پاکستان میں بھی کام کیا ہے۔
2006 سے وہ رس رنگ میں ہفتہ وار کامکالم پاکستان ڈائری بھی لکھتی ہیں جو ہندوستان کے سب سے بڑے ہندی اخبار دینک بھاسکر کا سنڈے میگزین ہے۔
 
== ازدواجی زندگی ==
زاہدہ حنا کے شوہر [[جون ایلیا]] ایک ادبی رسالے ''انشاء'' سے بطور مدیر وابستہ تھے جہاں ان کی ملاقات زاہدہ حنا سے ہوئی بعد میں ان دونوں نے شادی کر لی۔ زاہدہ حنا اپنے انداز کی ایک ترقی پسند دانشور ہیں اور اب بھی دو روزناموں، روزنامہ جنگ اور [[ایکسپریس]]، <nowiki/>میں حالات حاضرہ اور معاشرتی موضوعات پر لکھتی ہیں۔ جون اور زاہدہ کی 2 بیٹیاں اور ایک بیٹا پیدا ہوئے۔ 1980ء کی دہائی کے وسط میں ان کی طلاق ہو گئی۔
 
== تصانیف ==
1,346

ترامیم