"مدھر کپیلا" کے نسخوں کے درمیان فرق

177 بائٹ کا ازالہ ،  5 مہینے پہلے
درستی
(درستی)
{{خانہ معلومات مصنف}}
{{خانہ معلومات مصنف|name=مدھر کپیلا|image=कपिला.jpg|caption=|birth_date={{birth date|df=yes|1942|4|15|}}|birth_place=جالندھر شہر، [[برطانوی راج|برطانوی بھارت]]|occupation=مصنف، صحافی، نقاد|language=[[ہندی]]|genre=}}'''مدھر کپیلا''' (پیدائش 15 اپریل 1942) ایک [[ناول نگار]] ، <ref>[http://timesofindia.indiatimes.com/city/Kapila-Sehgal-novels-discussed/articleshow/1814986829.cms "Kapila, Sehgal novels discussed"]. ''Times of India'', 10 September 2001</ref> [[صحافی]] ، آرٹ نقاد [[ہندی زبان|اور ہندی]] ادب کا جائزہ لینے والی معروف [[بھارتی]] شخصیت ہیں۔
 
{{خانہ معلومات مصنف|name=مدھر کپیلا|image=कपिला.jpg|caption=|birth_date={{birth date|df=yes|1942|4|15|}}|birth_place=جالندھر شہر، [[برطانوی راج|برطانوی بھارت]]|occupation=مصنف، صحافی، نقاد|language=[[ہندی]]|genre=}}'''مدھر کپیلا''' (پیدائشولادت: 15 اپریل 19421942ء – وفات: 19 دسمبر 2021ء) ایک بھارتی [[ناول نگار]] ، <ref>[http://timesofindia.indiatimes.com/city/Kapila-Sehgal-novels-discussed/articleshow/1814986829.cms "Kapila, Sehgal novels discussed"]. ''Times of India'', 10 Septemberستمبر 2001</ref> [[صحافی]] ، آرٹ نقاد [[ہندی زبان|اور ہندی]] ادب کا جائزہ لینے والی معروف [[بھارتی]] شخصیت ہیں۔تھیں۔
 
== ابتدائی زندگی ==
 
== کیریئر ==
مادھور کپیلا 19771977ء سے ایک آزاد صحافی اور آرٹ نقاد رہی ہیں۔ یومیہ ٹربیون ، ڈنامان ، پنجاب کیسری ، جساٹا ، ہندی ہندوستان اخبارات میں کام کیا ہے۔ انہوں نے مختصر کہانیاں اور ادبی کالم <ref>[http://www.tribuneindia.com/2003/20030712/main5.htm "‘Sahni was embodiment of Punjabi spirit’"] ''The Tribune'', Chandigarh, India 12 Julyجولائی 2003.</ref> بھی لکھے ہیں جن میں کالا کھیتھریا ، جو ایک ہفتہ وار آرٹ اور ادبی کالم تھا جو ڈینک ٹریبیون میں شائع ہوا تھا ۔ اسی رسالے نے اس نے اس کا پہلا ناول ''ستون سوار'' ( [[ہندی زبان|ہندی]] : सातवाँ छवि) بھی شائع کیا تھا۔ <ref>[http://timesofindia.indiatimes.com/city/kapila-sehgal-novels-discussed/articleshow/1814986829.cms "Kapila, Sehgal novels discussed"]. ''Times of India'', 10 Septemberستمبر 2001</ref>
 
== ایوارڈ ==
20112011ء میں مدھور کپیلا کو چندی گڑھ ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈ ادب میں ان کی نمایاں خدمات کے لیے پیش کیا گیا تھا۔ <ref>[http://indiatoday.intoday.in/story/an-effort-to-make-the-city-a-literary-hub/1/128419.html "An effort to make the city a literary hub"]. ''India Today'', Vikas Kahol. 2 February 2011</ref> <ref>[http://timesofindia.indiatimes.com/Awards-of-Recognition/speednewsbytopic/keyid-544474.cms "Awards of Recognition"]. ''Times of India'', Amit Sharma</ref>
 
مدھور کپیلا کو22 اگست-4 ستمبر تک سنڈے انڈین کی طرف سے 21 ویں صدی کی 111 ہندی خواتین ادیبوں میں شامل کیا گیا۔ <ref>[http://www.thesundayindian.com/111_hindi_female_writers.pdf "111 Hindi Female Writers"]. ''The Sunday Indian'', Ashok Bose</ref>
 
== کتابیات ==
 
=== ناول ===
 
* {{حوالہ کتاب|title=بھٹکے راہی भटके राही}}
* {{حوالہ کتاب|title=ستون وار सातवाँ स्वर|publisher=کریتی پراکشن|year=2002|isbn=81-8060-066-1}}
 
=== مختصر کہانی کے مجموعے ===
 
* {{حوالہ کتاب|title=بیچوں بیچ बीचों बीच|publisher=ابھی ویاکتی پراکشن|year=1993|isbn=}}
* {{حوالہ کتاب|title=تب شاید तब शायद|publisher=شیلا لیکھ|year=2004}}
 
== مزید دیکھیے ==
 
* [[ہندوستانی ادب|بھارتی ادب]]
* [[ہندی ادب]]
* [[ساہتیہ اکیڈمی اعزاز]]
 
== بیرونیحوالہ روابطجات ==
{{حوالہ جات}}
 
== بیرونی روابط ==
* [https://www.jstor.org/stable/43856753?seq=1#page_scan_tab_contents https://www.jstor.org/stable/43856753؟seq=1#] ''صفحے_scan_tab_contents ہندوستانی ادب ، ساہتیہ اکیڈمی جریدہ ، جلد.۔ 57 ، نمبر 1 (273) (جنوری / فروری 2013) ، صفحہ 170-175'' - دریا کی مانند بہہ رہا ہے- مدھر کپیلہ اور جسونت سنگھ سینی
* http://www.thesundayindian.com/111_hindi_female_writers.pdf ''اتوار کو ہندوستانی (22 اگست - 4 ستمبر ، 2011)'' - 211 صدی کی 111 خواتین ہندی ''مصنفیں (سن سن انڈین - 21 وادی سن 111 ہندی مضمون'' )