"صاحب" کے نسخوں کے درمیان فرق

343 بائٹ کا اضافہ ،  7 سال پہلے
کوئی ترمیمی خلاصہ نہیں
(نیا صفحہ: لفظ '''صاحب''' اردو میں کسی امیر شخص کے لیے بولا جاتا ہے جو نوکر کی ضد سمجھا جا سکتا ہے۔ لکھنے میں کس...)
 
لفظ '''صاحب''' اردو میں کسی امیر شخص کے لیے بولا جاتا ہے جو [[نوکر]] کی ضد سمجھا جا سکتا ہے۔ لکھنے میں کسی مذکر شخص کے آخر میں احتراماً لفظ "صاحب" کا اضافہ کیا جاتا ہے۔ مثلاً اگر کسی شخص کا نام "عثمان خلیل" ہے تو تکریم کے طور پر اس کے نام پر "صاحب" کا لاحقہ لگاتے ہوئے "عثمان صاحب" لکھا اور پکارا جا سکتا ہے۔ عموما شخص کا پہلا نام کے ساتھ ہی صاحب کا لاحقہ لگایا جاتا ہے۔ اگر پورا نام "عثمان خلیل" لیا جائے تو "صاحب" کا لاحقہ کم ہی لگایا جاتا ہے۔ انگریزی میں mister اور فرانسسی میں monsieur کی طرح "صاحب" اردو میں تقریباً انہی معنوں میں استعمال ہوتا ہے۔ مونث شخص کے لیے '''صاحبہ''' کا لاحقہ لگاتے ہیں۔
 
 
اکثر عمر میں اپنے سے بڑے شخص کے لیے جو کہ مقرر کے معاشی معیار (یا معاشرتی معیار) سے نیچا نہ ہو کے نام کے ساتھ "صاحب" کا لاحقہ لگایا جاتا ہے۔ طالب علم اپنے اساتذہ کے نام کے ساتھ، نوکر اپنے آجر کے نام کے ساتھ بھی احتراماً صاحب کا اضافہ کرتے ہیں۔
 
[[سکھ مت]] میں بے جان اشیاء جن کا مذہبی احترام مقصود ہو کے ساتھ بھی "صاحب" کا سابقہ لگایا جاتا ہے۔
 
زبان میں لفظ صاحب سے مراد کسی شخص کو کسی چیز کا مالک بتانا مقصود ہوتا ہے۔ مثلاً قابل احترام ہونا۔ جو وسیع علم رکھتا ہو اسے اردو میں "صاحب علم"، جو استطاعت رکھتے ہو انہیں "صاحب استطاعت" وغیرہ۔
 
 
11,218

ترامیم