عقبہ ابن ابی معیط

(عقبہ بن ابی معیط سے رجوع مکرر)

عقبہ ابن ابی معیط بن ابی عمرو بن امیہ بن عبدشمس بن عبد مناف بن قصی بن کلاب بن مرة بن کعب بن لؤی بن غالب بن فهر بن مالک بن النضر بن کنانة بن خزیمة بن مدرکة بن الیاس بن مضر بن نزار بن معد بن عدنان بنو امیہ میں سے تھا۔ پیغمبر اسلام کے اعلان نبوت کے بعد سب سے زیادہ اسلام دشمنی اسی نے کی تھی اور یہی وہ شخص ہے جس نے حالت نماز میں محمد بن عبد اللہ کے شانہ پر اونٹ کی اوجھڑی ڈال دی تھی۔اور ایک بار جب وہ مسجد الحرام میں نماز ادا فرما رہے تھے تو اس عقبہ نے ان کے گلے میں چادر ڈال کر اس زور سے کھینچا کہ پیغمبر اسلام گھٹنوں کے بل گر پڑے۔

عقبہ ابن ابی معیط
معلومات شخصیت
مقام پیدائش مکہ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 624  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بدر  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات لڑائی میں مارا گیا  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قاتل عاصم بن ثابت  ویکی ڈیٹا پر (P157) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب مشرک
زوجہ اروی بنت کریز  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد ام کلثوم بنت عقبہ،  ولید بن عقبہ  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ تاجر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
لڑائیاں اور جنگیں غزوۂ بدر  ویکی ڈیٹا پر (P607) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

جنگ بدرترميم

جنگ بدر میں کفار کی جانب سے مسلمانوں کے خلاف جنگ آزما تھا۔ مسلمانوں نے اسے گرفتار کر لیا اور نبی کے سامنے پیش کیا، انھون ںے اس کے قتل کا حکم صادر فرمایا۔ لیکن اس بارے میں اختلاف روایات ہے کہ اسے کس نے قتل کیا کچھ روایات کے مطابق علی بن ابی طالب نے اسے قتل کیا اور بعض روایات کے مطابق عاصم بن ثابت نے اسے تہ تیغ کیا تھا۔

حوالہ جاتترميم

ماخذاتترميم

  • سیرہ ابن هشام
  • شاہکار اسلامی انسائیکلو پیڈیا، جلد نمبر 25، صفحہ نمبر 1084- ناشر : سید قاسم محمود، طابع : ریاض حسین، الجدہ پریس، اردو بازار، لاہور - تاریخ اشاعت : یکم دسمبر 1977