فہرست ممالک بلحاظ سند حق ایجاد

یہ فہرست ممالک بلحاظ سند حق ایجاد یے جسے عالمی تنظیم برائے فکری ملکیت نے 2007 [1] اور 2010 [2] میں شائع کیا۔

2010 میں 20 چوٹی کے ممالکترميم

سند حق ایجاد درخواست بلحاظ ملک (آخری اعداد و شمار: 2008)

درجہ ملک تعداد سند حق ایجاد درخواست
1   جاپان 502,054
2   ریاستہائے متحدہ 400,769
3   چین 203,481
4   جنوبی کوریا 172,342
5   جرمنی 135,748
6   فرانس 47,597
7   مملکت متحدہ 42,296
8   روس 29,176
9   سویٹزرلینڈ 26,640
10   نیدرلینڈز 25,927
11   اطالیہ 21,911
12   کینیڈا 21,330
13   سویڈن 17,051
14   آسٹریلیا 11,230
15   فن لینڈ 10,133
16   اسرائیل 9,877
17   ہسپانیہ 8,277
18   ڈنمارک 7,719
19   آسٹریا 7,711
20   بلجئیم 7,592

سند حق ایجاد عطا (آخری اعداد و شمار: 2008)

درجہ ملک تعداد سند حق ایجاد عطا
1   جاپان 239,338
2   ریاستہائے متحدہ 146,871
3   جنوبی کوریا 79,652
4   جرمنی 53,752
5   چین 48,814
6   فرانس 25,535
7   روس 22,870
8   اطالیہ 12,789
9   مملکت متحدہ 12,162
10   سویٹزرلینڈ 11,291
11   نیدرلینڈز 11,103
12   کینیڈا 8,188
13   سویڈن 7,453
14   فن لینڈ 4,675
15   آسٹریلیا 4,386
16   ہسپانیہ 3,636
17   بلجئیم 2,948
18   اسرائیل 2,665
19   ڈنمارک 2,347
20   آسٹریا 2,306

سند حق ایجاد نافذ (آخری اعداد و شمار: 2008, مخلوط)

درجہ ملک تعداد سند حق ایجاد نافذ
1   ریاستہائے متحدہ 1,872,872
2   جاپان 1,270,367
3   چین 828,054
4   جنوبی کوریا 624,419
5   مملکت متحدہ 599,062
6   جرمنی 509,879
7   فرانس 438,926
8   یورپ 268,384 (یورپی پیٹنٹ آفس)
9   ہانگ کانگ 227,918
10   ہسپانیہ 166,079
11   روس 147,067
12   کینیڈا 121,889
13   آسٹریلیا 107,708
14   سویڈن 105,571
15   بلجئیم 87,189 (2003)
16   جمہوریہ آئرلینڈ 78,761
17   میکسیکو 73,076
18   موناکو 50,392
19   لکسمبرگ 49,947
20   فن لینڈ 47,070

2007 میں 10 چوٹی کے ممالکترميم

  • گزشتہ رپورٹ سے قدر میں تبدیلی کر مندرجہ ذیل کے طور دیکھا جاتا ہے:
  •   = اضافہ۔
  •   = مستحکم۔
  •   = کمی۔
چوٹی کے دس درخواست گزار ممالک
درجہ ملک % تبدیلی
1   جاپان   0.9
2   ریاستہائے متحدہ   9.5
3   چین   32.9
4   جنوبی کوریا   14.8
5   جرمنی   1.7
6   کینیڈا   1.5
7   روس   6.8
8   آسٹریلیا   3.3
9   مملکت متحدہ   -6.6
10   بھارت   1.3
مقامی درخواست گزار
درجہ ملک % تبدیلی
1   جاپان   -0.1
2   ریاستہائے متحدہ   9.7
3   جنوبی کوریا   16.1
4   چین   42.1
5   جرمنی   -0.2
6   روس   2.9
7   مملکت متحدہ   -7.0
8   فرانس   -1.7
9   آسٹریلیا   1.1
10   بھارت   -8.0
غیر مقامی درخواست گزار
درجہ ملک % تبدیلی
1   ریاستہائے متحدہ   6.3
2   جاپان   11.4
3   جرمنی   6.0
4   جنوبی کوریا   27.3
5   فرانس   8.1
6   نیدرلینڈز   12.7
7   مملکت متحدہ   7.7
8   سویٹزرلینڈ   15.6
9   کینیڈا   3.3
10   اطالیہ   7.4

مقامی درخواست گزار فی ملین آبادی
درجہ ملک % تبدیلی
1   جاپان   -0.3
2   جنوبی کوریا   15.6
3   ریاستہائے متحدہ   8.6
4   جرمنی   -0.1
5   آسٹریلیا   0.0
6   نیوزی لینڈ   14.7
7   فن لینڈ   -9.3
8   ڈنمارک   -11.9
9   مملکت متحدہ   -7.5
10   سویڈن   -9.2
مقامی درخواست گزار فی خام ملکی پیداوار
درجہ ملک % تبدیلی
1   جنوبی کوریا   11.7
2   جاپان   1.7
3   جرمنی   -1.1
4   نیوزی لینڈ   13.9
5   ریاستہائے متحدہ   6.3
6   روس   -3.3
7   آسٹریلیا   -1.7
8   فن لینڈ   -10.9
9   چین   29.0
10   ڈنمارک   -14.3
مقامی درخواست گزار فی تحقیق اور ترقی اخراجات
درجہ ملک ملین $ 1 تحقیق اور ترقی
1   جنوبی کوریا 5.08
2   جاپان 3.37
3   نیوزی لینڈ 1.82
4   روس 1.56
5   یوکرین 1.09
6   آسٹریلیا 1.02
7   چین 0.91
8   جرمنی 0.91
9   پولینڈ 0.77
10   ریاستہائے متحدہ 0.72

عطا سند حق ایجاد کی تعداد
درجہ ملک سند حق ایجاد کی تعداد
1   ریاستہائے متحدہ 197,019
2   جاپان 185,827
3   جنوبی کوریا 63,865
4   جرمنی 48,700
5   فرانس 22,413
6   چین 21,519
7   روس 19,948
8   مملکت متحدہ 13,304
9   سویٹزرلینڈ 8,583
10   نیدرلینڈز 8,416
نافذ سند حق ایجاد
درجہ ملک سند حق ایجاد کی تعداد
1   جاپان 1,613,776
2   ریاستہائے متحدہ 1,214,556
3   جنوبی کوریا 353,251
4   جرمنی 245,403
5   فرانس 172,912
6   روس 99,819
7   مملکت متحدہ 79,855
8   چین 59,087
9   کینیڈا 55,977
10   سویٹزرلینڈ 52,754

حوالہ جاتترميم

  1. http://www.cetraonline.it/file_doc/285/wipo_pub_931.pdf%7B%7Bdead[مردہ ربط] link|date=August 2012}}
  2. "Intellectual Property Statistics". 12 مارچ 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 فروری 2013.