بدوی (عربی:  بدو)[1] غیر مہذب اور جنگلی عرب۔ یہ لوگ خانہ بدوش ہیں اور صحراؤں اور ریگستانوں میں زندگی بسر کرتے ہیں۔ ان کا پیشہ اونٹ اور گھوڑے اور بھیڑ بکریاں پالنا ہے۔ یہ لوگ مستقل مکان نہیں بناتے بلکہ خیموں میں رہتے ہیں۔ حسب ضرورت پانی اور چارے کی تلاش میں پھرتے رہتے ہیں، لیکن حضری (شہری) لوگوں کے مقابلے میں زیادہ جفاکش، جنگجو اور آزادی پسند واقع ہوئے ہیں۔ ان لوگوں کی عربی زبان ٹھیٹھ اور بامحاورہ ہوتی ہے اور جہاں کہیں زبان کا مفہوم مشکوک ہو وہاں بدوی زبان سے استفادہ کیا جاتا ہے۔ بدو لوگ مسلمان ہیں تاہم اپنی روایات کے سختی سے پابند ہیں اور بڑے مہمان نواز ہوتے ہیں۔ ہر قبیلے کا ایک شیخ ہوتا ہے۔

ایک بدو خاندان

بدو بطور مسلمانترميم

عربوں اور خصوصاًمسلمانوں کو اہل یورپ نے بدوی کہہ کر پکارا ہے، اس کے لیے وہ لفظ(Moor)استعمال کرتے ہیں۔ اسپین کے فاتح مسلمانوں کو ’’مور’’ کہہ کر پکارا جاتا ہے۔ حالانکہ بدو صرف خانہ بدوش لوگوں کو کہا جاتا ہے،جبکہ ان خانہ بدوشوں میں مسیحی اور یہودی بھی ہیں لیکن مذہبی منافرت کی بنیاد پر صرف مسلمانوں کو بدوی کہا جاتا ہے۔[2]

حوالہ جاتترميم

  1. "بدو - معجم الحكمة". 10 مئی 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مئی 2021. 
  2. انسائیکلوپیڈیا سیرت النبی،صفحہ 135 ،سید عرفان احمد،زمزم پبلشرز کراچی