خواجہ محمد حیات سلسلہ نقشبندیہ ڈھنگروٹ شریف کے بزرگ ہیں۔ انہیں حضرت اعلیٰ بابا جی کہا جاتا ہے۔ اب یہ سلسلہ ڈھانگری شریف سے منسوب ہے۔

ولادتترميم

میرپور (کشمیر ) کے جنوب مغرب میں دریائے جہلم اور دریائے پونچھ کے سنگم پر واقع ڈھنگروٹ شریف 1837ء میں ولادت ہوئی، والد کا نام محمد بہادر تھا۔

تعلیمترميم

ابتدائی تعلیم ڈھنگروٹ میں حاصل کیا قرآن پاک حفظ کرنے کے لیے دینہ کے قریب ساگری گئے۔ فن تجوید کے لیے کھاریاں کے قریب جوڑہ میں حافظ خواجدین کے پاس گئے۔ بعد از تکمیل تعلیم ڈھنگروٹ میں تدریس شروع کی کچھ عرصہ بعد میر پور کے قریب قصبہ تنگدیو میں بھی تدریس کی ۔

بیعت و خلافتترميم

اپنے جوڑہ کے قیام کے دوران حافظ خواجدین کے ساتھ باؤلی شریف گئے اور خواجہ محمد بخش المعروف لہندے والے حضرت صاحب کے بیعت ہوئے اور تربیت مکمل ہونے کے بعد خلافت اولیٰ عطا ہوئی۔ اپنے مرشد کی وفات کے بعد سید نیک عالم شاہ گوڑہ سیداں سے بھی فیض اور خلافت ثانیہ حاصل ہوئی۔

القابترميم

جامع الصفات، حامل الکمالات،منبع الفیوضات،مجسمۃ الحسنات،معلیٰ عن الالقاب، قبلہ عالم حضرت بابا جی،حضرت حافظ جی۔

خلفاءترميم

  • قاضی محمد سلطان عالم
  • میاں حسین علی خان
  • صوفی حشمت علی
  • میاں حسین علی
  • میاں ستار محمد چھتروہ
  • میاں باغ علی ڈومال* میاں شاہ محمد فتح پور
  • میاں خوشی محمد
  • میاں باغ علی بوعہ

اولادترميم

وفاتترميم

خواجہ محمد حیات کا وصال 3 ربیع الاول 1335ھ بمطابق 1916ء ڈھنگروٹ شریف میں ہوا [1]

حوالہ جاتترميم

  1. گلستان حیات،صوفی طالب حسین،بزم برادران طریقت ڈھانگری شریف میرپور آزاد کشمیر