سریہ سعد بن زید اشہلی

رمضان 8 ہجری میں سریہ سعد بن زید الاشیلی مناۃ کی جانب بھیجا گیا جب مکہ فتح ہو تو سعد بن زید الاشہلی کو المشللغسان کی طرف روانہ فرما یا یہاں اوس اور خزرج کا بت تھافتح مکہ کے دن انہیں20 سواروں کے ساتھ بھیجا۔ سعد جب مناۃ بت کی طرف بڑھے تو ایک برہنہ عورت جو سیاہ اور بکھرے بالوں کے ساتھ آگے بڑھی جو اپنے سینے پر ہاتھا مار رہی تھی اور انہیں کوس رہی تھی سعد نے اسے قتل کر دیا یہ واقعہ 24 رمضان 8 ہجری کا ہے۔[1]

سریہ سعد بن زید اشہلی
عمومی معلومات
متحارب گروہ
مسلمان
نقصانات

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. طبقات ابن سعد، حصہ اول ،صفحہ 362،،محمد بن سعد نفیس اکیڈمی کراچی