سعید الدین کاشغری

شیخ سعید الدین محمد بن محمد بن علی کاشغری صاحب منیۃ المصلی کہلاتے ہیں۔

علاقائی نسبتترميم

آبائی وطن کاشغر تھا اس لیے نسبت میں کاشغری کہلاتے ہیں

علمی مقامترميم

اپنے وقت کے بلند پایا فقیہ تھے مکہ معظمہ میں رہے اور علم تصوف حاصل کیا پھر یمن گئے اور وہاں تغر نامی ایک گاؤں میں مستقل اقامت پزیر ہو گئی

تصنیفاتترميم

آپ کی تصنیفات میں میں مجمع الغرائب ومتبع العجائب ہے منیۃ المصلی وغنیۃ المبتدی ہے جو درس نظامی کے نصاب میں داخل ہےصرف ابواب صلاۃ پر مشتمل ہے شیخ ابراہیم حلبی نے غنیۃ المستملی کے نام سے اس کی بہت عمدہ شرح لکھی جو کے کبیری نام سے مشہور ہے۔

وفاتترميم

1350ء میں وفات پائی[1]

حوالہ جاتترميم

  1. ظفر المحصلین باحوال المصنفین، صفحہ 379، محمد حنیف گنگوہی، دار الاشاعت کراچی