شیلا عبد اللہ (پیدائش 1971) ایک پاکستانی نژاد امریکی مصنفہ ، لکھاری ، اور ڈیزائنر ہیں ۔

زندگیترميم

شیلا عبد اللہ نے متعدد ایوارڈ حاصل کیے ہیں جن میں انگریزی زبان کے لئے پطرس بخاری ایوارڈ ، گولڈن کُوِل ایوارڈ ()، ریڈر ویوز ایوارڈ ، رٹن آرٹ ایوارڈ شامل ہیں۔

شیلا عبداللہ کو ہوبسن فاؤنڈیشن کی طرف سے گرانٹ بھی مل چکی ہے۔ بیونڈ دا کاین وال (Beyond the Cayenne Wall) پر انھیں شاندار فکشن کا جیوری پرائز ملا جو نورمبیگا فکشن ایوارڈ میں سب سے اعلی ایوارڈ ہے۔ [1]

تصانیفترميم

اس کی کتابوں میں سیفرون ڈریمز (Saffron Dreams) ، کاین وال سے پرے (Beyond the Cayenne Wall) اور بچوں کی تین کتابیں شامل ہیں:

  • رانی قوس قزح کی تلاش میں (Rani in Search of a Rainbow)
  • میری دوست سوہانا (My Friend Suhana)
  • مارکو کے لئے کتابچہ (A Manual for Marco)


انہوں نے خصوصی ضروریات والے بچوں کے لئے کتابیں بھی لکھیں ہیں۔

2014 کے اوائل میں ، واشنگٹن اور لی یونیورسٹی کی ایک تحقیقی ٹیم نے ایک مطالعہ کیا جس میں انھیں تحقیق سے یہ پتہ چلا کہ زعفران خواب(Saffron Dreams) سے 3،000 الفاظ کا اقتباس پڑھنے سے انسان کم نسل پرست ہوسکتا ہے۔ [2]

اس ناول کو آزاد تعلیمی ڈیٹا بیس کے تارکین وطن ادب میں پہلے پچاس عظیم کاموں میں سے ایک تسلیم کیا گیا اور بطور حوالہ متعدد جگہوں پر اسے شامل کیا گیا۔

حوالہ جاتترميم

  1. Oh، Seiwoong (2009). "Abdullah, Shaila". Encyclopedia of Asian-American Literature. صفحات 4–5. 
  2. M.D، Jalees Rehman (2014-05-06). "Does Literary Fiction Challenge Racial Stereotypes?". Huffington Post (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2018. 

بیرونی روابطترميم