عوامی تعلیمی منصوبہ

عوامی تعلیمی منصوبہ، تحریک منہاج القرآن کا تعلیمی منصوبہ ہے، جس کی بنیاد 1994 میں رکھی گئی ۔[1] تحریک منہاج القرآنکا عویٰ ہے کہ یہ غیر سرکاری سطح پر دنیا کا سب سے بڑا تعلیمی منصوبہ ہے۔

مقاصدترميم

عوامی تعلیمی منصوبہ جن مقاصد کو پیش نظر رکھ کر ترتیب دیا گیا، وہ ہیں:

  1. فروغ علم اور شرح خواندگی میں اضافہ کرنا
  2. طلبہ و طالبات کی علمی و عملی، فکری و نظریاتی اوراخلاقی و روحانی تربیت کا ایسا انتظام کرنا کہ جس سے تنگ نظری اور باہمی تعصبات و فرقہ پرستی پر مشتمل محدود سوچ کا خاتمہ ہو
  3. نصاب تعلیم میں دینی وعصری علوم کو یکجا کرنا
  4. نظام امتحانات کو جدید خطوط پر استوار کرنا
  5. لائبریریاں قائم کرنا

اہداف و کارکردگیترميم

عوامی تعلیمی منصوبہ میں ابتدائی طور پر طے کیے گئے اہداف اور ان کے حصول کی کاوشوں کا گراف حسب ذیل ہے:

ادارے اہداف کارکردگی
بین الاقوامی یونیورسٹی 1
قومی جامعات 5 1
کالجز 100 4
ماڈل سکول (ششم تا دہم) 1000 257
پبلک سکولز (نرسری تا پنجم): 5000 310

مربوط نظام تعلیمترميم

عوامی تعلیمی منصوبہ کے تحت قائم مراکز کو ترقی دے کر بعد ازاں پبلک سکولز کا درجہ دیا گیا، جس سے ابتدائی، مڈل اور ثانوی سکولوں کا قیام عمل میں آیا۔ 2002ء میں سکولوں کے لیے نظام العمل مرتب کر کے 572 تعلیمی اداروں کو مستقل حیثیت دے دی گئی۔

بیرونی روابطترميم

متناسقات: 31°29′00″N 74°18′32″E / 31.4833738°N 74.3088156°E / 31.4833738; 74.3088156

حوالہ جاتترميم