ایک ماں اپنی اولاد کو خود کے اوپر تھامے ہوئے ہیں۔
دریائی شیرنی ماں اپنے نومولود کے ساتھ
پیلے پیٹ والی ایک مرموٹ ماں اپنی اولاد کا بوسہ لیتے ہوئے۔.

ماں کا بندھن ایک رشتے داری ہے جو ایک ماں اور اس کے بچے کے درمیان ہوتی ہے۔ حالاں کہ عام طور اس کو حمل اور زچگی سے جوڑا جاتا ہے، ماں کا بندھن کبھی کبھار اس وقت بھی رو نما ہو سکتا ہے جب زیر گفتگو بچے سے کوئی فطری رشتہ نہ ہو جیسے کہ تبنیت کے معاملے میں۔

جسمانی اور جذباتی عوامل، دونوں ماں اور بچے کے بندھن کے عمل پر اثر انداز ہو سکتے ہیں۔ جدائی کے تجسس کی بدنظمی کی صورت میں ایک بچہ خوف زدہ اور بے حد گھبرایا ہوا ہوتا ہے، خصوصًا جب وہ اپنے سے محبت کرنے والوں سے الگ ہوتا ہے، جو اکثر یا تو ماں باپ میں سے کوئی ایک یا کوئی اور پرورش کنندہ ہو سکتا ہے۔ نئی مائیں ہمیشہ اپنی اولاد سے فوری محبت کا جذبہ نہیں محسوس کرتی ہیں۔ اس کے بر عکس یہ بندھن ایک طویل عرصے کے روابط پر محیط ہو سکتا ہے۔ بندھنوں میں مضبوطی اور استقامت گھنٹوں، دنوں، ہفتوں یا کبھی کبھی تو مہینوں کے عرصے پر محیط ہو سکتی ہے۔[1]

مزید دیکھیےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. Winkler، Jiří (2000). "Utváření mateřského pouta v těhotenství" (Czech میں). Časopis Lékařů Českých 139 (1): 5–8. doi:ڈی او ئي. PMID 10750284. http://www.muni.cz/research/publications/314151.