مرحلہ دوری اور وقت کے لیے استعمال ہوتا ہے۔

لغوی معنیترميم

وہ مسافت جومسافر ایک دن میں طے کر لے مرحلہ کہلاتا ہے اس کی جمع مراحل ہے[1]

اصطلاحی معنیترميم

سال کے سب سے چھوٹے دنوں میں ایک دن کی مسافت عام انداز میں چلنے کو مرحلہ اور تین مراحل پر مسافر کے احکام لاگو ہوتے ہیں

پیمائشترميم

اس کی پیمائش 8 فرسخ اس میں تین دن کا سفر شمار ہو گا جو عام شخص پیدل چلے جس میں حسب عادت اترنا ،آرام کرنا ،کھانا اور نماز پڑھنا شامل ہے۔

شرعی استعمالترميم

فقہا نے مراحل کے ساتھ سفر کو وابستہ کیا ہے جس سے رخصتیں ثابت ہوتی ہیں جیسے نماز میں قصر کرنا دو نمازوں کو جمع کرنا احناف کے نزدیک سفر 3 مراحل پر مشتمل ہوتا ہے جمہور کے نزدیک 24 ہاشمی میل یا 8 فرسخ ہے[2]

حوالہ جاتترميم

  1. المصباح المنیر
  2. موسوعہ فقہیہ ،جلد38 صفحہ 343، وزارت اوقاف کویت، اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا