اقوام متحدہ کے 1951ء پناگزینوں کی حیثیت سے متعلق موتمر کی رُو سے، پناہ گزیں ایسا شخص ہے جو نسل، مذہب، قومیت، کسی معاشرتی گروہ میں شمولیت، سیاسی رائے، جیسی کسی وجہ کے باعث اذیت پہنچائے جانے کے حقیقی خوف سے اپنی قومیت کے ملک سے باہر ہو اور اس خوف کے باعث اس ملک کی حفاظت حاصل کرنے سے قاصر ہو یا نہ حاصل کرنا چاہتا/چاہتی ہو۔[1]

پناہگزیں

تاریخی اور ہم عصر پناہ گزینی بحرانترميم

مشرق وسطی میں پناہ گزینی صورت حالترميم

عراق پر حملہ اور جنگترميم

عراق پر امریکی اور مغربی حملہ کے باعث لاکھوں پناہ گزیں بنے۔ عراق کی 16% آبادی (4,700,000 افراد) پناہ گزیں یا بے گھر ہوئے۔[2] مغربی ممالک تک پہنچنے والے افراد کو واپس دکھیلا جاتا رہا۔[3]

ایشیاترميم

افغانستانترميم

1977ء میں افغانستان پر روسی حملے کے نتیجہ میں تقریباً 20 لاکھ افغان نقل مکانی کر کے پاکستان میں بس گئے۔