کیل یا میخ(انگریزی: nail)سے مراد دو چیزوں میں جوڑ بٹھانے والی سلاخ خواہ وہ دھات کی ہو یا کسی اور شے کی ہو۔کیل لفظ سنسکرت سے ماخوذ ہے۔جبکہ میخ فارسی سے ماخوذ ہے۔[1][2]

کیل

تاریخترميم

کیل کی تاریخِ ایجاد قدیم رومن دور 2،000 سال سے بھی زیادہ عرصہ پرانی ہے۔کیل کی ایجاد سے قبل تعمیری کام لکڑی کے ڈھانچوں کو جیومیٹری کے اصولوں پر ایک دوسرے سے ملحق کرنا پڑتا تھا جو کہیں زیادہ مشکل تھا۔

سن 1790 کی دہائی اور 1800 کی دہائی تک ہاتھ سے بنے ہوئے کیل کا استعمال عام تھا جس میں ایک لوہار لوہے کی چھڑی کو گرم کرتا تھا اور پھر چار کونوں پر ہتھوڑا مارتا تھا تب کہیں جاکے ایک کیل بنتی تھی۔

ہنری بسمر نامی انجینئر نے فولاد سے بڑے پیمانے پر کیل تیار کرنے کے طریقہ متعارف کروایا۔[3]

مزید دیکھئےترميم

حوالہ جاتترميم

  1. "کیل لفظ کے معنی". ریختہ لغت. 
  2. "کیل". اردو لغت. 
  3. "کیل کی ایجاد کیسے ہوئی؟". ماہنامہ دستک.