ابن بسام الشنترینی

ابن بسام الشینتارینی (1058ء-1147ء) کو ابن بسام کے نام سے جانا جاتا ہے۔ ابن بسام ایک عرب شاعر اور الاندلس سے تعلق رکھنے والے مورخ تھے۔ ابن بسام 1058ء میں پرتگال کے سانتارای شہر میں پیدا ہوئے اور ان کا تعلّق بنو تغلب قبیلے سے تھا۔[3]

ابن بسام الشنترینی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1058[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سانتارای، پرتگال  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 1147 (88–89 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت دولت مرابطین  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مورخ،  شاعر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان عربی[2]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ابن بسام نے بتایا ہے کہ کسٹیلین کے مسلسل حملہ آوروں نے پرتگال میں واقع سانتارای سے بھاگنے پر مجبور کیا۔ سانتارای کو مغرب کے شہروں کے آخری شہر بھی کہا جاتا ہے۔ ابن بسام نے اپنی زمینوں اور مال کو تباہ ہوتے دیکھا تو وہاں سے نکلنے کا ارادہ کر لیا۔جب ابن بسام نے سانتارای شہر کو چھوڑا تب ان کے پاس کوئی چیز نہیں تھی۔[4]

حوالہ جاتترميم

  1. ربط : https://d-nb.info/gnd/120943204  — اخذ شدہ بتاریخ: 16 مارچ 2015 — اجازت نامہ: CC0
  2. Identifiants et Référentiels — اخذ شدہ بتاریخ: 3 مئی 2020
  3. Baker، Khalid Lafta. "Ibn Bassām as a literary historian, a critic and a stylist: a study of al-Dhakhīra" (PDF). gla.ac.uk. 
  4. ""Archived copy"". muslimheritage.com.